جسٹس عظمت سعید:چھ ماہ کے چیف جسٹس

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption جسٹس عظمت سعید سپریم کورٹ میں سینیارٹی کے اعتبار سے آخر نمبر پر ہوں گے

پاکستان کی سپریم کورٹ کے نئے نامزد جج جسٹس شیخ عظمت سعید کا نام لاہور ہائی کورٹ کے ان چیف جسٹس صاحبان کی فہرست میں شامل ہوگیا ہے جو مختصر مدت کے لیے چیف جسٹس ہائی کورٹ کے منصب پر فائز رہے۔

سپریم کورٹ کے نامزد جج جسٹس شیخ عظمت سعیدگزشتہ بارہ برسوں میں لاہور ہائی کورٹ کے واحد چیف جسٹس ہیں جو تقریبا چھ ماہ ہی ہائی کورٹ کے چیف جسٹس رہ سکے۔

جسٹس عظمت سعید کی سپریم کورٹ میں تقرری کی ایک وجہ وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی وہ ممکنہ اپیل بھی بنیں جو وزیراعظم نے اپنی جماعت پیپلز پارٹی کے فیصلے کی روشنی میں دائر ہی نہیں کی۔

سپریم کورٹ کے سات رکنی بنچ نے وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو توہین عدالت کے مقدمہ میں سزا سنائی تھی اس کے خلاف ممکنہ اپیل کی سماعت کے جو بڑا بنچ تشیل دیا جانا تھا لیکن تین ججوں نے بنچ کا حصہ بننے سے معذوری ظاہر کی تھی جس کے باعث بنچ کی تشکیل کے لیے ججوں کی تعداد مکمل نہیں تھی۔

اسی بنا پر اپیل کی سماعت کے لیے اہڈہاک جج مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاہم وکلا تنظیموں کی مخالف کے باعث اس عمل کو موخر کردیا گیا اور پہلے سپریم کورٹ کی واحد خالی اسامی کو پر کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

سپریم کورٹ کی خالی اسامی کو پر کرنے کے لیے چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس عظمت سعید کا نام چنا گیا جو سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس مشیر عالم اور پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس دوست محمد خان سے سینیارٹی کے اعتبار سے جونیئر تھے۔

لاہور میں بی بی سی کے نامہ نگار عباد الحق کے مطابق سپریم کورٹ بار کے سابق صدر حامد خان کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ میں ججوں کی تقرری کے لیے سینیارٹی کا کوئی ایسا طریقہ کار نہیں ہے جس کے تحت اس صوبہ کا چیف جسٹس ہی سپریم کورٹ جائے گا جو دیگر ہائی کورٹس کے چیف جسٹس صاحبان کے مقابلے میں سینیئر ہو گا۔

حامد خان نے بتایا کہ سپریم کورٹ کی جو موجودہ اسامی پر کی گئی وہ جسٹس سائر علی کی ریٹائرمنٹ کی وجہ سے خالی ہوئی اور ان کا تعلق لاہور ہائی کورٹ سے ہے اس لیے خالی اسامی کو پر کرنے کے لیے لاہور ہائی کورٹ سے کسی جج کی سپریم کورٹ میں تقرری ہونی تھی۔

انہوں نے واضح کیا کہ سپریم کورٹ میں ججوں کی تقرری کے لیے صوبوں کا کوئی کوٹہ نہیں ہے تاہم یہ تقرری ایک روایت کے تحت ہی پر کی جاتی ہیں۔

پاکستانی سپریم کورٹ میں چیف جسٹس سمیت کل ججوں کی مقررہ تعداد سترہ ہے ۔ اس وقت سپریم کورٹ میں صوبہ سندھ سے تعلق رکھنے والے چھ جج موجود ہیں جبکہ اس کے مقابلہ میں پنجاب سے پانچ اور پشاور ہائی کورٹ کے چار جج سپریم کورٹ میں کام کررہے ہیں۔

چیف جسٹس پاکستان کے علاوہ بلوچستان سے کوئی اور جج سپریم کورٹ میں نہیں ہے۔

قانونی ماہرین کے مطابق آبادی کے اعتبار سے سب سے بڑے صوبے پنجاب کے سبکدوش ہونے والے چیف جسٹس عظمت سعید اب سپریم کورٹ میں سینیارٹی کے اعتبار سے آخر نمبر پر ہوں گے۔