راجہ پرویز اشرف نے وزارتِ عظمیٰ کے عہدے کا حلف اٹھا لیا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان کے نومنتخب وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے ایوان صدر اسلام آباد میں منعقدہ ایک تقریب میں اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔

صدر آصف علی زرداری نے راجہ پرویز اشرف سے حلف لیا اور انہوں نے ملک کے پچیسویں وزیر اعظم کی حیثیت سے حلف اٹھایا۔

پاکستان کے سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق ستائیس وفافی وزراء اور گیارہ وزرائے مملکت نے بھی اپنے عہدوں کا حلف اٹھا لیا۔

تقریب میں سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی اور مسلح افواج کے سربراہان کے علاوہ چیئرمین سینیٹ، سپیکر قومی اسمبلی، سفارت کاروں اور ارکان پارلیمان کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

دریں اثناء امریکہ نے پاکستان میں نئے وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے انتخاب پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ امریکہ نئے وزیر اعظم کے ساتھ کام جاری رکھے گا۔

اس سے پہلے جمعہ کی شام کو قومی اسمبلی نے پیپلز پارٹی کے راجہ پرویز اشرف کو نیا وزیر اعظم منتخب کیا۔

قائدِ ایوان کے انتخاب کے لیے مقابلہ پاکستان پیپلز پارٹی کے راجہ پرویز اشرف اور پاکستان مسلم لیگ نواز کے سردار مہتاب عباسی کے درمیان تھا۔

قائدِ ایوان کے منتخب کے لیے کُل 300 ووٹ ڈالے گئے جن میں سے راجہ پرویز اشرف کو 211 ووٹ ملے جبکہ مہتاب عباسی نے 89 ووٹ حاصل کیے۔

نومنتخب قائدِ ایوان نے قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہا ’غیر جمہوری افراد جہمہوریت اور پارلیمان کو نہیں مانتے۔ ہم پارلیمان کی بالادستی کو یقینی بنائیں گے۔ پارلیمنٹ کو دیا گیا اختیار کسی اور کو نہیں دیں گے۔‘

پاکستان کو درپیش مسائل کی بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک کو سنجیدہ چیلنجز درپیش ہیں۔ ’پاکستان کو تین بڑے بحرانوں کا سامنا ہے بے روزگاری، مہنگائی اور توانائی۔ ان کے حل کے لیے اپوزیشن کو مذاکرات کی دعوت دیتا ہوں۔‘

انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے مسئلے کا حل ان کی پہلی ترجیح ہے اور وہ بلوچ عوام، قیادت اور نوجوانوں سے مذاکرات کریں گے۔

اس سے قبل جب قومی اسمبلی کا اجلاس جب ہوا تو قائدِ ایوان کے امیدوار جمیعت علمائے اسلام کے قائد مولانا فضل الرحمان نے سپیکر سے درخواست کی کہ ممبر قومی اسمبلی فوزیہ وہاب کے انتقال کے باعث اس اجلاس میں انتخاب نہ کیا جائے اور وزیر اعظم کے انتخاب کو ملتوی کیا جائے۔

ممبر قومی اسمبلی نوید قمر نے اس موقع پر کہا کہ یہ سپیشل سیشن ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ ان انتخابات میں غیر جانبدار رہیں گے اور اس انتخاب میں حصہ نہیں لیں گے اور نہ ہی ان کی جماعت ووٹ ڈالے گی۔

اجلاس کے قبل وزیرِ اعظم کے عہدے کے لیے نامزد امیدوار راجہ پرویز اشرف نے پاکستان مسلم لیگ (ق) کے سربرہ چوہدری شجاعت سے ملاقات کی۔ جس میں انہوں نے مسلم لیگ قاف کی حمایت پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

دریں اثناء امریکہ نے پاکستان میں نئے وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے انتخاب پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ وہ نئے وزیر اعظم کے ساتھ کام جاری رکھیں گے۔

جمعہ کو امریکی دارالحکومت واشنگٹن میں امریکی محمکمہ خارجہ کی ترجمان وکٹوریہ نولینڈ نے ہفتہ وار میڈیا بریفنگ میں ایک صحافی کے سوال پر جواب دیتے ہوئے کہا کہ سب سے پہلی بات کہ ہم (امریکہ) اس بات پر خوش ہیں کہ پاکستان میں قیادت کا تنازع حل ہوگیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ’ ظاہر ہے کہ ہم ان معاملات کے لیے کوششیں جاری رکھیں جو ہم پاکستان کے ساتھ طے کرنا چاہتے ہیں۔‘

اسی بارے میں