انتظامیہ غیرجانبدار نہیں ہے: جسٹس مشیر عالم

تصویر کے کاپی رائٹ

سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس مشیر عالم نے کہا ہے کہ کراچی میں بدامنی کے بارے میں پولیس نے انہیں بتایا ہے کہ انتظامیہ غیر جانبدار نہ ہونے کے باعث صورتحال میں بہتری نہیں آرہی ہے۔

یہ بات انہوں نے کراچی میں بدھ کو سندھ ہائی کورٹ میں سات ججوں کی حلف برداری کی تقریب کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہی۔

چیف جسٹس مشیر عالم نے بتایا کہ پولیس کے تبادلے ریگولیٹ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور سندھ حکومت نے بھی یقین دہائی کرائی ہے کہ کسی بڑی وجہ کے بغیر آئندہ روزانہ کی بنیاد پر تبادلے نہیں ہوں گے اور اس کے بہت جلد اثرات ظاہر ہوں گے۔

سپریم کورٹ کی جانب سے کراچی میں بدامنی کے واقعات کے از خود نوٹس کے فیصلے کے تحت سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس پر امن و امان کی نگرانی کی ذمہ داری عائد کی گئی تھی۔

جسٹس مشیر عالم کا کہنا تھا کہ پولیس نے انہیں آگاہ کیا ہے کہ کچی آبادیوں کی کوئی منصوبہ بندی نہیں ہوتی جہاں جرائم پیشہ افراد پناہ لیتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان علاقوں میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کو کارروائی میں مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔ بقول ان کے ان کچی آبادیوں کو منتقل کرنے پر بھی غور کیا جائے۔

سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس نے بتایا کہ ایک کرائم ریسرچ سینٹر قائم کیا جائے گا جو تحقیقات کرے گا کہ کس علاقے میں اور کس نوعیت کے جرائم ہو رہے ہیں۔

اسی بارے میں