کراچی: پاک بھارت سوشل میڈیا کانفرنس

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 13 جولائ 2012 ,‭ 07:00 GMT 12:00 PST

پاک بھارت سوشل میڈیا میلے سے لائیو ٹوئٹ

  • ذیشان حیدر

    پاک بھارت سوشل میڈیا میلے کے پہلے دن کا اختتام
  • ذیشان حیدر

    سیشن میں گرما گرمی اور ’دھوبی گھاٹ‘ میں تبدیل ہو رہا ہے۔
  • ذیشان حیدر

    متحدہ قومی موومنٹ سے تعلق رکھنے والا ایک شخص کھلم کھلا مسلم لیگ نواز اور تحریکِ انصاف کے حامیوں کو ٹرولز قرار دے رہا ہے۔
  • ذیشان حیدر

    سوشل میڈیا کے پہلے دن صرف ٹوئٹر ہی پر بات ہوئی جبکہ کسی نے فیس بک پر بات نہیں کی۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ سیٹیزن جرنلسٹس کی پسند کیا ہے۔
  • بینا سرور

    سوشل میڈیا کے باعث سیاستدان زیادہ ذمہ دار ہو رہے ہیں
  • ذیشان حیدر

    پارٹیوں کی سیاست کا سوشل میڈیا پر اثر پر دھوبی گھاٹ سیشن جاری ہے
  • کرونا

    ٹوئٹر سست صحافت کو فروغ دے رہا ہے۔ ٹوئٹر کبھی بھی ہمیشہ درست نہیں ہوسکتا ہے۔ ٹوئٹر خطرناک ہے کیونکہ آپ پر معلومات کی بمباری کر دی ہے لیکن یہ پھر صحافیوں پر منحصر ہے کہ فری لنچ کہیں دستیاب نہیں۔ ٹوئٹر نیا ٹِکر ہے۔ (ایڈیٹر تہلکہ ڈاٹ کام)
  • ماروی سرمد

    عام آدمی پیمرا سے کبھی بھی شکایت نہیں کرتا۔ پچھلے چار سالوں میں صرف دو افراد نے ٹی وی پروگرام کے حوالے سے شکایت کی۔
  • بینا سرور

    پاکستان میں ٹی وی کی ریٹنگز کے لیے چھ سو گھرانوں کی رائے لی جاتی ہے۔ ان چھ سو میں سے تین سو گھرانے کراچی سے ہوتے ہیں جبکہ بلوچستان سے کوئی نہیں۔
  • بینا سرور

    سوشل میڈیا کی صورت میں لوگوں کو وہ جگہ ملی ہے جہاں وہ اپنی آواز اٹھا سکتے ہیں۔
  • ذیشان حیدر

    سوشل میڈیا پر لوگ اس ایشو پر بات کرتے ہیں جن سے وہ براہِ راست متاثر ہو رہے ہوتے ہیں۔
  • ماروی سرمد

    ضابطہ اخلاق ہونا چاہیے تاکہ لوگ اپنے ذاتی مفادات کے لیے اس کو استعمال نہ کرسکیں جیسے کہ حال ہی میں آف ائر ویڈیو میں دیکھا گیا۔
  • ماروی سرمد

    سوشل میڈیا کو خود ہی ضابطہ اخلاق کا اطلاق کرنا چاہیے۔
  • مشرف فاروقی

    ٹوئٹر پر جو لکھا جاتا ہے وہ خبریں نہیں ہوتیں بلکہ محض خیالات کا اظہار ہوتا ہے۔
  • صہیب اطہر

    ابھی بھی ایبٹ آباد میں رائے منقسم ہے کہ کمپاؤنڈ میں اسامہ بن لادن موجود تھے یا نہیں۔
  • صہیب اطہر

    میڈیا میں سے سب سے پہلے بی بی سی نے ان سے رابطہ کیا۔ (صہیب نے اسامہ بن لادن کے کمپاؤنڈ پر حملے کے حوالے سے سب سے پہلے ٹوئٹ کیا)
  • عائشہ ٹیمی حق

    انتہا پشندی کی بڑی وجہ غربت ہے۔ اگر لوگوں کے پاس نوکری ہے تو وہ اپنے بچوں کو مدرسے نہیں بھیجیں گے۔
  • علی گل پیر

    سندھی دہشتگردی سے کہیں دور ہیں۔ آپ کو کہیں اسامہ بن چانڈیو نہیں ملے گا۔
  • کشمیر سے راحیل خورشید

    یہ سرگرمیاں ہیں یا سستی شہرت؟
  • بےغیرت بریگیڈ کے علی آفتاب

    فوج پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ ایک گانہ نہیں برداشت کر سکتے تو جنگ کیسے لڑ سکتے ہیں۔
  • علی گل پیر

    پاکستان میں سوشل میڈیا کے بارے میں لوگوں کے تاثرات غلط ہیں۔ (انٹرنیٹ پر وڈیرے کا بیٹا نامی گانے کے لیے مشہور ہیں)
  • ذیشان حیدر

    بینا سرور نے پاکستان اور بھارت کے مابین ویزے کا عمل آسان بنانے کے لیے ٹوئٹر پر مہم شروع کرنے کا مشورہ دیا ہے۔
  • ذیشان حیدر

    سبین محمود کی زبانی بھارتی مہمانوں کو ویزا دینے کے لیے رحمان ملک کی ذاتی کاوشوں کی کہانی سے شرکاء محظوظ ہوئے۔
  • امریکی کونسل جنرل

    سوشل میڈیا والوں سے ملنے کی اچھی بات یہ ہے کہ آپ کو ٹائی نہیں پہننی پڑتی۔
  • ذیشان حیدر

    برکھا دت نے ویزوں کے بارے میں بات کی اور سوشل میڈیا سے سرحدیں مٹنے کا ذکر کیا۔

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں آج سے پاک بھارت سوشل میڈیا میلے کا آغاز ہوگیا ہے جس میں سماجی رابطوں سے متعلق کئی اہم موضوعات پر بات ہوگی۔

خطے میں انٹرنیٹ کے فروغ کے ساتھ ساتھ سماجی رابطوں کی ویب سائٹوں کی جانب بھی اہم تبدیلی آئی ہے۔

اب لوگ فیس بک اور ٹوئٹر پر کسی بھی اہم موضوع پر اپنے احساسات اور جذبات کا اظہار کھل کر کر سکتے ہیں۔

بعض مبصرین کے خیال میں سماجی ویب سائٹوں کی صورت میں لوگوں کو ایک نئی آزادی ملی ہے۔

لیکن سوال یہ ہے کہ کیا اسے مثبت اور مفید انداز میں پاکستان میں استعمال کیا جا رہا ہے؟ اس ملک میں یہ ویب سائٹیں کیا عرب سپرنگ جیسے انقلاب کا باعث بن سکتی ہیں؟ آپ ان ویب سائٹس پر کیوں جاتے ہیں اور اس سے آپ کو کیا فائدہ حاصل ہوتا ہے؟ اس کے مثبت استعمال کے لیے آپ کے پاس کیا تجاویز ہیں؟

بی بی سی اردو کے نامہ نگار ذیشان حیدر کراچی میں اس میلے میں شرکت کر رہے ہیں اور ساتھ ساتھ مقبول ویب سائٹ ٹوئٹر کے ذریعے براہِ راست ہمیں میلے کی تفصیلات سے بھی آگاہ کر رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔