’سیاسی جماعتیں ذمہ داری کا مظاہرہ کریں‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption کمیشن کے مطابق یہ ملک کے لیے ایک اہم گھڑی ہے اور اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا ہے ہم فیصلہ ساز موڑ پر کھڑے ہیں۔

انسانی حقوق کمیشن آف پاکستان نے جمہوری نظم ونسق پر منڈلاتے ہوئے خطرات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے سیاسی جماعتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ جمہوریت کو درپیش خطرات کے ازالے کے لیے ذمہ داری کا مظاہرہ کریں۔

کمیشن کے مطابق جمہوریت کو لاحق خطرات کا حل انتخابی طریقۂ کار پر اعتماد اور نگران بندوبست پر اتفاق رائے کا اظہار کرنے میں ہے۔

انسانی حقوق کمیشن نے سیاسی جماعتوں پر زور دیا کہ وہ باضابطہ انتقال اقتدار کو یقینی بنائیں اور ان عناصر سے ہوشیار رہیں جو منتخب نمائندوں اور انتخابی طریقہ کار کے بغیر محض دکھاوے کا جمہوری نظام نافذ کرنا چاہتے ہیں۔

انسانی حقوق کمیشن کی پالیسی ساز کمیٹی کے اجلاس کے بعد جاری ہونے والے اس بیان میں کمیشن کی سربراہ زہرہ یوسف نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کو حالات کی سنگینی اور جمہوری نظم ونسق کو درپیش مشکلات کا ادراک کرنا چاہیے اور انہیں علم ہونا چاہیے کہ ان کا حالیہ رویہ جمہوریت کے لیے سود مند نہیں ہے۔

انسانی حقوق کمیشن نے اس امید کا اظہار کیا کہ سیاسی جماعتیں اپنی ذمہ داری کا احساس کریں گی اور اپنے نمائندوں کو منتخب کرنے کے عوامی حق سے انہیں محروم کرنے کے کسی بھی منصوبے میں شریک نہیں ہوں گی۔

کمیشن کی سربراہ نے اس بات پر تشویش ظاہر کی کہ شدید بدعنوانی اور ناقص نظم ونسق کے باعث سیاسی جماعتوں کی حمایت میں شدید کمی واقع ہوئی ہے اور عارضی مفادات کے لیے وضع کردہ غیر معقول پالیسیاں بھی سیاسی عمل کے لیے خطرہ ہیں۔

زہرہ یوسف نے خبردار کیا کہ سیاسی جماعتوں کو ادراک کرنا چاہیے کہ خاموش تماشائی بنے رہنے یا آپس میں بے معنی لڑائی لڑتے رہنے کا کوئی مثبت نتیجہ برآمد نہیں ہوگا۔ان کے بقول اس صورت حال کی غیر واضح نوعیت لاقانونیت ، لسانی اور فرقہ وارنہ ہلاکتوں میں ملوث افراد کو سزا سے استثناء کی کیفیت میں شدت پیدا کر رہی ہیں۔

کمیشن کے مطابق یہ ملک کے لیے ایک اہم گھڑی ہے اور اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا ہے ہم فیصلہ ساز موڑ پر کھڑے ہیں۔

اسی بارے میں