دیر میں دھماکہ، تین افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ

صوبہ خیر پختونخواہ کے ضلع اپر دیر میں سڑک کنارے ایک مسافر گاڑی کے قریب دھماکے میں تین افراد ہلاک اور سات زخمی ہوئے ہیں۔

پولیس اہلکاروں کا کہنا ہے کہ ایک مسافر پک اپ گاڑی ڈھوک درہ شاٹ کس سے شرینگل کے علاقے کی جانب جا رہی تھی کے راستے میں سڑک کنارے نصب کیے گئے بارودی مواد کا دھماکہ ہوا ہے۔

پولیس کے مطابق دھماکہ ریموٹ کنٹرول سے کیا گیا جس سے مسافر پک میں سوار تین افراد ہلاک اور سات زخمی ہوئے ہیں۔ زحمیوں کو دیر ہسپتال پہنچایا گیا ہے جہاں دو کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے۔

پولیس اہلکاروں نے بتایا کہ دھماکے سے ایسا لگتا ہے کہ شرپسند گاڑی میں سوار افراد کو ہی نشانہ بنانا چاہتے تھے۔

پشاور سے ہمارے نامہ نگار عزیزاللہ خان نے بتایا کہ ایسی اطلاعات ہیں کہ اس گای میں مقامی امن لشکر کے افراد سوار تھے لیکن پولیس اہلکاروں کا کہنا تھا کہ یہ امن لشکر کے افراد نہیں بلکہ عام شہری تھے جو اپنے اپنے کام سے مختلف دیہی علاقوں کی جانب جا رہے تھے۔

اپر دیر میں کے مختلف علاقوں میں ماضی میں امن لشکر اور شدت پسندوں کے مابین متعدد بار جھڑپیں ہو چکی ہیں جس میں دونوں جانب سے جانی نقصان ہوئے ہیں۔

اپر دیر کا یہ علاقے ڈھوک درہ شاٹ کس اور مضافاتی علاقے کچھ عرصے سے پر امن تھے اور یہاں کوئی بڑا واقعہ پیش نہیں آیا تھا۔

ڈھوک درہ میں دو ہزار نو میں ایک بڑا دھماکہ ہوا تھا جس میں ہلاکتیں ہوئی تھیں۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ان علاقوں میں حکومت کے حمایتی افراد ہیں اس لیے شدت پسندی یہاں اب دم توڑ رہی ہے۔

اسی بارے میں