سندھ:’بھارت ہجرت کرنے کی خبروں پر نوٹس‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption یہ قافلہ ان ہندو زائرین کا ہے کہ مقدس مذہبی مقامات کی زیارت کی غرض سے گیا ہے:مکیش کمار چاؤلہ

پاکستان میں امن و امان کی صورتحال، سماجی ناہمواری اور اقلیتوں کے ساتھ ناروا سلوک کی بنیاد پر بعض ناراض ہندو خاندانوں کی پاکستان سے ترکِ وطن اور نقلِ مکانی کر کے بھارت جا بسنے سے متعلق پاکستانی ذرائع ابلاغ کی خبروں پر نوٹس لیتے ہوئے صوبۂ سندھ کے وزیر اعلیٰ سید قائم علی شاہ نے معاملے کی چھان بین کے لیے ایک خصوصی کمیٹی تشکیل دی ہے۔

لیکن کمیٹی کے سربراہ اور ہندو اقلیتی برادری سے تعلق رکھنے والے صوبائی وزیر مکیش کمار چاؤلہ نے واضح تردید کی ہے کہ یہ خاندان ترک وطن کرکے بھارت میں سکونت اختیار کرنے نہیں گئے، بلکہ ہندوؤں کے مقدس مقامات کی زیارت کی غرض سے گئے ہیں جو اپنی زیارات مکمل کرتے ہی وطن واپس لوٹ آئیں گے۔

بدھ کو نجی ملکیت میں چلنے والے بعض پاکستانی ذرائع ابلاغ نے دعویٰ کیا تھا کہ حالات سے تنگ اقلیتی خاندان ملک چھوڑ کر ہمیشہ کے لیے بھارت میں سکونت اختیار کرنے کی غرض سے پاکستان سے جا رہے ہیں۔

کراچی میں بی بی سی کے نامہ نگار جعفر رضوی سے گفتگو کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن مکیش کمار چاؤلہ نے کہا کہ بعض نجی ٹیلی ویژن چینلز نے ایک ایسی خبر نشر کی جس میں دو ڈھائی سو خاندانوں پر مشتمل ایک قافلے کو بذریعہ ریل بھارت روانہ ہوتے دکھایا گیا اور یہ تاثر پیدا کیا گیا کہ یہ لوگ پاکستان سے ترک وطن کر کے جا رہے ہیں۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ یہ قافلہ ان ہندو زائرین کا ہے جو مقدس مذہبی مقامات کی زیارت کی غرض سے گیا ہے۔

’بھارت میں ہمارے بڑے مقدس مقامات ہیں جن کی زیارت کے لیے ایسے قافلے وقتاً فوقتاً جاتے رہتے ہیں جیسے بدھ کے روز بھی ایک قافلہ جیکب آباد سے گیا، ایک دو دن میں کشمور سے جانے والا ہے پھر کچھ دن بعد کندھ کوٹ اور پھر کراچی سے بھی ایسے ہی قافلے جانے والے ہیں۔‘

مکیش کمار چاؤلہ کا کہنا تھا کہ یہ قافلے مہینے دو مہینے میں زیارتیں مکمل کر کے وطن واپس آ جاتے ہیں اور ان کے خیال میں ذرائع ابلاغ میں یہ غلط طریقے سے خبریں پیش کی گئی ہیں کہ یہ افراد ہمیشہ کے لیے ترک وطن کر کے بھارت جا بسنے والے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یہی وجہ ہے کہ غلط خبروں کا نوٹس لیتے ہوئے سندھ کے وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ نے ایک تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دی ہے جو اپنی تحقیقات مکمل کر کے وزیراعلیٰ کو رپورٹ پیش کرے گی۔

لیکن اس سوال پر کہ اس سے پہلے تو خود ایک سابق رکن سندھ اسمبلی رام سنگھ سوڈھا ترک وطن کرکے بھارت جا بسے ہیں، صوبائی وزیر مکیش کمار نے کہا یہ بالکل درست ہے کہ وہ بھارت چلے گئے مگر رام سنگھ سوڈھا کے صاحبزادے بیس برس سے بھارت میں رہتے تھے۔

اسی بارے میں