لاہور: کارخانے میں آتشزدگی سے اکیس ہلاک

آخری وقت اشاعت:  منگل 11 ستمبر 2012 ,‭ 16:08 GMT 21:08 PST

لاہور میں آتشزدگی سے ہلاکتوں کے واقعات پہلے بھی پیش آ چکے ہیں

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور کے نواحی علاقے میں جوتے بنانے والے ایک کارخانے میں آتشزدگی سے کم از کم اکیس افراد ہلاک اور چودہ زخمی ہو گئے ہیں۔

یہ آگ منگل کی دوپہر بند روڑ کے قریب علاقے فیروز والا میں واقع فیکٹری میں لگی اور مرنے والوں میں سے زیادہ تر کی موت دم گھٹنے سے ہوئی۔

لاہور کے ضلعی رابطہ آفیسر نور الامین مینگل کا کہنا ہے کہ ابتدائی اطلاعات کے مطابق فیکٹری کے جنریٹر میں آگ لگی جس نے عمارت میں موجود کیمیکل کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

لاہور پولیس کے ایک سینیئر اہلکار نے خبر رساں ایجنسی اے پی کو بتایا کہ آگ اس وقت لگی جب لوڈشیڈنگ کی وجہ سے کارخانے میں موجود افراد نے جنریٹر چلانے کی کوشش کی اور اس دوران وہاں موجود کیمیائی مادے نے آگ پکڑ لی۔

نامہ نگار عباد الحق کے مطابق ریسکیو ڈبل ون ڈبل ٹو کے مطابق جس وقت فیکٹری میں آگ لگی اس وقت عمارت میں پینتیس افراد موجود تھے۔

امدادی کارکنوں کے مطابق عمارت کا ایک ہی دروازہ تھا جس کی وجہ سے عقبی دیوار توڑ کے لاشوں اور زخمیوں کو نکالا گیا۔

میو ہسپتال کے سربراہ ڈاکٹر زاہد پرویز نے ذرائع ابلاغ کو بتایا کہ زیادہ تر مزدوروں کی ہلاکت دم گھٹنے سے ہوئی۔ان کے بقول زخمیوں میں سے دو کی حالت نازک ہے۔

پولیس کے مطابق بعض لاشیں اتنی بری جھلس گئی ہیں کہ ان کی شاخت کرنے میں مشکل ہورہی ہے۔

ادھر پنجاب حکومت نے اس واقعہ کی تحقیقات کا حکم دے دیا اور وزیراعلیٰ پنجاب کی معائنہ ٹیم اس واقعے کی تحقیقات کرے گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔