پنجاب اسمبلی کی قرادادیں

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 14 ستمبر 2012 ,‭ 15:05 GMT 20:05 PST

یہ متفقہ قرادادیں اسلام مخالف فلم اور لاہور اور کراچی میں دو کارخانوں میں آتشزدگی پر تھیں۔

پاکستان کے صوبہ پنجاب کی قانون ساز اسمبلی نے اسلام مخالف فلم اور آتشزدگی کے دوہرے واقعات پر مذمتی قراردادیں متفقہ طور پر منظور کرلیں۔

ان متفقہ قراداوں میں سے ایک اسلام مخالف فلم کے بارے میں تھی جب کہ دوسری قرادادیں لاہور اور کراچی میں دو کارخانوں میں آتشزدگی پر تھیں۔

آج لاہور میں ہونے والا پنجاب اسمبلی کا یہ اجلاس حزب اختلاف کی درخواست پر بلایا گیا تھا۔

معمول کی کاروائی کو معطل کر کے متنازعہ فلم پر قرارداد مسلم لیگ ق کے پارلیمانی لیڈر چوہدری ظہیر الدین نے پیش کی۔

اس قراداد کے متن میں کہا گیا ہے کہ مہذب دنیا کے تمام ممالک بین المذاہب ہم آہنگی کے داعی ہیں لیکن اس دعوے کے برعکس انہی ملکوں کے اخبارات اور میڈیا تسلسل سے مسلمانوں کی توہین مذہب کے مرتکب ہو رہے ہیں۔

اسی طرح اس قراداد میں کہا گیا کہ یہ مسلمانوں کے جذبات کو بھڑکانے کی سازش ہے۔

قرارداد میں یہ بھی مطالبہ کیا گیا کہ مسلمانوں کی دل آزاری کا یہ سلسلہ فی الفور بند کیا جائے۔

کراچی اورلاہور میں آتشزدگی کے واقعات سے متعلق قرارداد وزیرقانون رانا ثنا اللہ نے پیش کی۔

قرارداد میں دنوں واقعات میں ہونے والے جانی نقصان پر گہرے رنج وغم کا اظہار کیا گیا اور ان واقعات کو انسانی المیہ اور قومی سانحہ قرار دیا گیا۔ پنجاب اسمبلی کے ارکان نے جاں بحق ہونے والوں کے خاندانوں سے یکجہتی کا اظہار کیا۔

یہ دونوں قراردادیں متفقہ طور پر منظور کی گئیں۔

قراردادوں کی منظوری کے بعد اجلاس میں حکومتی رکن اصغر منڈا کی جانب سے کورم کی نشاندہی کردی گئی۔

اس نشاندہی پر پنجاب اسمبلی کا اجلاس کورم پورا نہ ہونے کے باعث غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردیا گیا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔