نگران حکومت اٹھارہ مارچ کے بعد: کائرہ

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 27 ستمبر 2012 ,‭ 14:56 GMT 19:56 PST

تمام سیاسی جماعتوں سے مشاورت کی جائے گی: کائرہ

پاکستان کے وزیر اطلاعات و نشریات قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ آئندہ برس مارچ میں پارلیمان کی مدت کے خاتمے کے بعد نگران حکومت قائم کر دی جائے گی۔

جمعرات کو الیکشن کمیشن میں اجلاس کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آئندہ انتخابات آزادانہ اور شفاف انداز میں مقررہ وقت پر ہوں گے۔

پاکستان کے سرکاری ٹی وی کے مطابق قمر زمان کائرہ کا کہنا تھا کہ ’ اٹھارہ مارچ پارلیمان کی مدت کے خاتمے کا دن ہے اور اسی دن حکومت کی مدت بھی ختم ہو رہی ہے چنانچہ نگران حکومت اٹھارہ مارچ کو ہی قائم ہوگی‘۔

نگران سیٹ اپ کی تشکیل میں اختلاف کے بارے میں سوال پر وزیرِ اطلاعات نے کہا کہ متفقہ نگران حکومت کے لیے پارلیمنٹ کے اندر اور باہر کی تمام سیاسی جماعتوں سے مشاورت کی جائے گی۔

وزیراطلاعات نے کہا کہ اب تک سب کچھ اتفاقِ رائے سے ہی کیا گیا ہے اور نگران حکومت کے معاملے میں بھی ایسا ہی ہوگا اور اگر اتفاقِ رائے نہ ہوا تو اس کے لیے بھی آئینی طریقۂ کار موجود ہے۔

ایک اور سوال پر وزیر اطلاعات نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی سمیت تمام سیاسی جماعتوں کو الیکشن کمیشن پر مکمل اعتماد ہے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن تمام سیاسی جماعتوں کےساتھ مشاورت کے ساتھ درست سمت میں آگے بڑھ رہا ہے۔

نگران حکومت کے ارکان سے متعلق ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا حزب اختلاف نے سردار عطاء اللہ مینگل سمیت دو نام تجویز کیے تھے اور اس تجویز پر جس قسم کا ردعمل سامنے آیا ہے وہ سب کے سامنے ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’اگر کوئی جماعت نمبر بنانے کی غرض سے اس قسم کی تجاویز دے گی تو اس کا حال بھی وہی ہوگا جو سردار عطاء اللہ مینگل کے معاملے میں ہوا‘۔

.

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔