کراچی میں دو افراد ہلاک

آخری وقت اشاعت:  بدھ 24 اکتوبر 2012 ,‭ 20:36 GMT 01:36 PST

کراچی میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ میں دو افراد ہلاک ہوگئے ہیں، جماعت احمدیہ کا کہنا ہے دونوں کا تعلق ان کی جماعت سے تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رات کو آٹھ بجے کے قریب بلدیہ سیکٹر نمبر دو میں نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے پرچون کی دکان میں فائرنگ کی، جس میں دکاندار بشیر احمد بھٹی ہلاک ہوگئے۔ مقتول کی عمر اڑتالیس برس تھی۔

بشیر احمد کی میت عباسی شہید ہپستال منتقل کی گئی ہے، ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ انہیں سینے میں دو گولیاں لگی ہیں۔

دوسرے واقعے میں رات کو نو بجے کے قریب بلدیہ ٹاؤن سیکٹر آٹھ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ میں ایک چالیس سالہ ہومیو پیتھک ڈاکٹر ہلاک ہوگئے ہیں، پولیس کا کہنا ہے کہ مقتول ڈاکٹر عبدالحمید اپنے کلینک میں موجود تھے جب ان پر فائرنگ کی گئی۔ مقتول کی لاش سول ہپستال منتقل کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے احمدی جماعت سے تعلق رکھنے والے ایک خاندان پر فائرنگ کی گئی تھی، جس میں ایک نوجوان ساد ہلاک جبکہ اس کے والد اور سسر زخمی ہوگئے تھے۔

جماعت احمدیہ کے ترجمان سلیم الدین کا کہنا ہے کہ رواں سال کراچی میں ان کی جماعت کے نو افراد کو قتل کیا گیا ہے اور زیادہ تر واقعات بلدیہ اور اورنگی ٹاؤن میں پیش آئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بلدیہ ٹاؤن میں کچھ ایسے عناصر ہیں جو احمدی جماعت کو برداشت نہیں کر رہے اس لیے انہیں ٹارگٹ بنایا جا رہا ہے۔

سلیم الدین کا کہنا تھا کہ انتظامیہ ملزمان کا کھوج لگانے اور احمدی جماعت کو تحفظ فراہم کرنے میں مکمل طور پر ناکام نظر آتی ہے۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔