خیبر پختونخوا: ن لیگ میں اختلاف

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 30 نومبر 2012 ,‭ 15:53 GMT 20:53 PST

پاکستان مسلم لیگ (نواز ) خیبر پختونخوا میں کچھ عرصے سے اندرونی اختلافات کا شکار ہے۔ جماعت کو حالیہ دھچکا اس وقت پہنچا جب رکن صوبائی اسمبلی اور خواتین ونگ کی جنرل سیکرٹری شازیہ اورنگزیب نے مسلم لیگ نواز کو خیر آباد کہہ کر پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت کا اعلان کر دیا۔

شازیہ اورنگزیب کو پاکستان مسلم لیگ نواز کی فعال رہنما سمجھا جاتا تھا لیکن اب وہ اس جماعت کا حصہ نہیں رہیں۔

شازیہ اورنگزیب نے جمعہ کو پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا ہے۔ یہ اعلان انھوں نے پیپلز پارٹی کے صوبائی صدر انور سیف اللہ خان کی رہائش گاہ پر ایک اخباری کانفرنس میں کیا۔

انہوں نے چند روز پہلے پشاور پریس کلب میں ایک اخباری کانفرنس میں مسلم لیگ نواز کی اعلیٰ قیادت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ یہ جماعت اب لیڈروں کی جماعت ہے یہاں کارکنوں کو کوئی نہیں پوچھتا اس لیے وہ مسلم لیگ نواز کی بنیادی رکنیت سے مستعفی ہو رہی ہیں۔

"یہ جماعت اب لیڈروں کی جماعت ہے یہاں کارکنوں کو کوئی نہیں پوچھتا اس لیے میں مسلم لیگ نواز کی بنیادی رکنیت سے مستعفی ہو رہی ہوں"

شازیہ اورنگزیب

انتخابات سے پہلے جس طرح پاکستان پیپلز پارٹی، تحریک انصاف، عوامی نشینل پارٹی اور جمعیت علماء اسلام نے سیاسی سرگرمیوں کا آغاز کیا ہے اور جگہ جگہ چھوٹے بڑے جلسوں کے علاوہ روٹھے دوستوں کو منانے اور اہم سیاسی رہنماؤں سے ملاقاتیں کر کے انھیں اپنی جماعت میں شامل کرنے کی کوششیں کر رہی ہیں مسلم لیگ نواز کے قیادت کی جانب سے خیبر پختونخوا میں اس طرح کی کوئی سرگرمیاں ہوتی نظر نہیں آ رہی ہیں۔

پیپلز پارٹی خیبر پختونخوا کے صدر انور سیف اللہ خان نے پارٹی کا صدر نامزد ہونے کے بعد جماعت کو فعال کرنے کے لیے سیاسی رہنماوں سے رابطے کیے ہیں اور وہ ناراض دوستوں کو منانے کے لیے کوششیں کر رہے ہیں۔

عوامی نیشنل پارٹی مختلف شہروں میں جلسے منعقد کر رہی ہے جن سے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا امیر حیدر خان ہوتی سمیت دیگر قائدین خطاب کرتے ہیں۔ جمعیت علماء اسلام (ف) نے جرگے منعقد کیے ہیں اور مختلف مقامات پر جلسوں کا انعقاد کیا ہے۔

اس کے بر عکس خیبر پختونخوا کی سطح پر مسلم لیگ نواز کی کوئی سیاسی سرگرمیاں نظر نہیں آ رہی ہیں جبکہ پنجاب اور سندھ میں مسلم لیگ نواز زیادہ متحرک نظر آ رہی ہے۔

" پاکستان مسلم لیگ نواز میں اختلافات کی باتیں درست نہیں ہیں۔ہماری جماعت نے پنجاب کے بعد خیبر پختونخواہ میں سب سے موثر سیاسی سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی ہیں۔"

جنرل سیکرٹری پاکستان ملسم لیگ نواز اقبال ظفر جھگڑا

پاکستان مسلم لیگ نواز کو مانسہرہ میں بھی مشکل صورتحال کا سامنا ہے جہاں جماعت کے سربراہ نواز شریف کے داماد کیپٹن صفدر کے صوبائی قائدین پیر صابر شاہ اور مہتاب عباسی کے ساتھ اختلاف ہیں۔

مسلم لیگ نواز کے سربراہ نواز شریف نے مبینہ مطور پر اگرچہ اپنے داماد کو جماعت سے دور رہنے کی تاکید کی ہے لیکن ایسی اطلاعات ہیں کہ اب بھی جماعت کے اندر کشیدہ صورتحال پائی جاتی ہے۔

سابق وفاقی وزیر امیر مقام کی مسلم لیگ نواز میں دوبارہ شمولیت کی وجہ سے جماعت میں اختلافات نے جنم لیا ہے۔ ایسی اطلاعات ہیں کہ انہوں نے صوبے کی سطح پر اپنے اور دیگر رہنماؤں کے لیے جماعت میں اہم عہدوں کا مطالبہ کیا ہے جس پر پہلے سے موجود رہنماؤں نے سخت احتجاج کیا تھا۔

پاکستان مسلم لیگ نواز میں اختلافات کے حوالے سے جب مرکزی جنرل سیکرٹری اقبال ظفر جھگڑا سے رابطہ قائم کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ جماعت میں اختلافات کی باتیں درست نہیں ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ان کی جماعت نے پنجاب کے بعد خیبر پختونخوا میں سب سے زیادہ موثر سیاسی سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جاوید ہاشمی سمیت دیگر رہنماؤں جنھوں نے مسلم لیگ نواز کو چھوڑا ہے انھوں نے سیاسی غلطیاں کی ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ آنے والے وقت میں لوگ دیکھیں گے کہ بڑی تعداد میں لوگ نواز لیگ میں شامل ہوں گے۔

ایک سوال کے جواب میں انھوں نے تسلیم کیا کہ امیر مقام اور ان کے ہمراہ دیگر مسلم لیگ نواز میں شمولیت اختیار کرنے والے رہنماؤں کو عہدے دیے گئے جس سے پرانے کارکن اور رہنما ناراض ہوئے تھے لیکن بعض اوقات اس طرح کے اقدامات کرنے پڑتے ہیں۔

خیبر پختونخوا میں پیپلز پارٹی، عوامی نیشنل پارٹی، جمعیت علماء اسلام ، جماعت اسلامی اور پاکستان مسلم لیگ نواز اپنے اپنے حلقہ انتخاب رکھتے ہیں لیکن بعض نشستوں پر ان جماعتوں کے امیدواروں کے درمیان کانٹے کے مقابلے بھی دیکھے جاتے ہیں۔

اس مرتبہ پاکستان تحریک انصاف بھی پورے جوش کے ساتھ انتخابی میدان میں موجود ہوگی اور ایسی صورت میں کسی بھی جماعت کے اختلافات یا غلط فیصلے اس جماعت کے انتخابی نتائج پر بری طرح اثر انداز ہو سکتے ہیں۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔