جی ایچ کیو حملہ: ملزمان کی اپیلیں مسترد

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 7 دسمبر 2012 ,‭ 18:10 GMT 23:10 PST

سنہ دو ہزار نو میں فوجی وردیوں میں ملبوس شدت پسندوں نےجی ایچ کیو پر حملہ کیا تھا

ملٹری اپیل کورٹ نے سنہ دو ہزار نو میں راولپنڈی میں فوج کے ہیڈکوارٹر پر حملے کے الزام میں گرفتار ہونے والے سات ملزمان کو مجرم قرار دیتے ہوئے سزاؤں کے خلاف دائر کی جانے والی اپیلیں مسترد کر دی ہیں۔

فوج کے جج ایڈووکیٹ جنرل نے اس واقعہ میں ملوث ڈاکٹر عثمان عرف عقیل کو موت کو سزا سُنائی تھی جبکہ عثمان خلیق اور محمد ماجد کو پچیس پچیس سال اور عمران صدیق، عدنان اور طاہر شفیق کو دس دس سال کی سزا سُنائی تھی۔

ڈاکٹر عثمان کے وکیل طارق اسد نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ اُن کے موکل کے خلاف ہونے والے کورٹ مارشل سے متعلق سپریم کورٹ میں ایک رٹ دائر کر رکھی تھی جس کی سماعت تیس نومبر تک ملتوی کردی گئی تھی۔

اُنہوں نے کہا کہ اپیلیں مسترد ہونے کا علم اُنہیں اُس وقت ہوا جب ڈاکٹر عثمان کے والد محمد نذیر اپنے بیٹے سے ملاقات کرنے کے لیےگئے تو وہاں اُنہیں بتایا گیا کہ اُن کے بیٹے کی سزا کے حلاف اپیل مسترد کرد ی گئی ہے۔

اس ضمن میں بی بی سی نے فوج کے شعبۂ تعلقات عامہ کے سربراہ میجر جنرل عاصم سلیم باجوہ سے رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی لیکن وہ دستیاب نہیں تھے۔

ڈاکٹر عثمان کے والد نذیر احمد نے بی بی سی کو بتایا کہ اس مقدمے میں گرفتار ہونے والے دیگر افراد کے ورثا بھی چند روز ملاقات کے لیے اڈیالہ جیل گئے تھے جہاں سے اُنہیں بتایا گیا کہ اُن کے عزیزوں کی سزاؤں کے خلاف اپیلیں مسترد کرد ی گئی ہیں۔

یاد رہے کہ سنہ دو ہزار نو میں فوجی وردیوں میں ملبوس شدت پسندوں نےجی ایچ کیو پر حملہ کیا تھا جس میں ایک بریگیڈیئر سمیت متعدد فوجی اور سویلین ہلاک ہوگئے تھے جبکہ جوابی کارروائی کے دوران نو حملہ آور ہلاک ہوگئے تھے اور سکیورٹی فورسز نے ڈاکٹر عثمان عقیل کو زخمی حالت میں گرفتار کیا گیا تھا۔

اس مقدمے میں کی جانے والی تحقیقات کی روشنی میں چھ ملزمان کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اگرچہ اس واقعہ کا مقدمہ متعلقہ تھانے میں درج کیاگیا تھا تاہم اس اہم مقدمے کی تفتیش میں فوجی افسران بھی شامل تھے اور پولیس کا کردار محض چھاپے مارنے تک ہی محدود تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔