کوئٹہ: ایک اور ڈاکٹر کو اغواء کرلیا گیا

آخری وقت اشاعت:  منگل 11 دسمبر 2012 ,‭ 15:15 GMT 20:15 PST
پاکستان میں ڈاکٹروں کے اغواء کے خلاف احتجاج کی فوٹو

اس سے قبل بھی کوئٹہ سے ایک ڈاکٹر کو اغواء کیاگیا تھا

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے مرکزی شہر کوئٹہ سے ایک اور ڈاکٹر کو اغوا کر لیا گیا اغوا ہونے والے ڈاکٹر عبدالعزیز بلوچ ہیں جو کہ آنکھوں کے ہسپتال ’ہیلپرز آئی‘ میں ملازم ہیں۔

پولیس کے مطابق ڈاکٹر عبدالعزیز بلوچ گزشتہ روز سے لاپتہ تھے اور ان کی گاڑی پیر اور منگل کی درمیانی شب سریاب لنک روڈ سے ملی ہے۔

پولیس اور ڈاکٹر عبدالعزیز کے رشتہ داروں نے شک کا اظہار کیا ہے کہ ان کو اغوا کر لیا گیا ہے۔

اس سے قبل ایک اور ممتاز ماہر چشم ڈاکٹر سعید خان کو سولہ اکتوبر کو اغوا کر لیا گیا تھا۔

بعض ذمہ دار ذرائع کے مطابق انہیں انتیس نومبر کو نوے لاکھ روپے کی ادائیگی کے بعد چھوڑ دیا گیا تھا۔

ڈاکٹر سعید خان کے اغواء کے خلاف تاحال کوئٹہ سمیت بلوچستان کے دیگر علاقوں میں ڈاکٹر ہڑتال پر تھے کہ ایک نئے ڈاکٹر کو اغوا کر لیا گیا جس نے ڈاکٹروں کی تشویش میں مزید اضافہ کر دیا ہے۔

ڈاکٹر سعید خان کے اغوا کے بعد ڈاکٹروں کی جاری ہڑتال کے باعث بلوچستان کے سرکاری ہسپتالوں میں علاج معالجے کی سہولیات ختم ہوکر رہ گئی ہیں اور ہسپتال ویرانی کا منظر پیش کر رہے ہیں۔

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن ( بلوچستان ) کا کہنا ہے کہ بلوچستان میں گزشتہ چند سال کے دوران اٹھائیس ڈاکٹروں کو قتل کیا گیا ہے جبکہ سولہ ڈاکٹروں کو تاوان کے لیے اغوا کیا گیا۔

بلوچستان کے ڈاکٹروں نے جو مطالبات پیش کیے ہیں ان میں ایک مطالبہ یہ بھی ہے کہ مغوی ڈاکٹروں کی بازیابی کے لیے تاوان کے طور پر جو رقم ادا کی گئی ہے وہ حکومت ادا کرے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔