اسلام آباد: مشرف کے وارنٹ گرفتاری جاری

آخری وقت اشاعت:  منگل 18 دسمبر 2012 ,‭ 14:46 GMT 19:46 PST

سابق فوجی صدر ان دنوں ملک سے باہر ہیں

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں ایک مقامی عدالت نے پاکستان کے چیف جسٹس اور دیگر ججز کو زبردستی اُن کے گھروں میں مقید رکھنے کے مقدمے میں سابق فوجی صدر پرویز مشرف کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کردیے ہیں۔

مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم کی گرفتاری کے لیے چھاپے ماریں جائیں گے اور اس ضمن میں تمام قانونی کارروائی مکمل کی جائے گی۔

یاد رہے کہ سنہ دوہزار نو میں اسلم گھمن ایڈووکیٹ کی درخواست پر تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ درج کیا گیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ سابق فوجی صدر پرویز مشرف نے تین نومبر سنہ دو ہزار سات کو ملک میں ایمرجنسی کے نفاذ کے بعد چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری سمیت اعلیٰ عدالتوں کے متعدد ججز کو اُن کے گھروں میں ہی اُن کے اہلخانہ سمیت قید کر دیا تھا اور اُنہیں کہیں بھی باہر جانے کی اجازت نہیں تھی۔

حکمراں جماعت پاکستان پیپلز پارٹی نے برسراقتدار آنے کے بعد سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے چیف جسٹس سمیت تمام ججز کی رہائی کے احکامات جاری کیے تھے۔

عدالتی احکامات کے بعد پولیس نے سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا اور درخواست گُزار کے بقول متعقلہ پولیس نے مقدمے کے اندراج کے بعد سابق صدر کی گرفتاری کے لیے کوئی عملی اقدامات نہیں کیے تھے۔

مقامی پولیس نے سابق صدر کے خلاف مقدمہ درج ہونے کے بعد اس پر تحققیات مبینہ طور پر روک دی تھیں جس کے خلاف اسلم گھمن نے عدالت میں درخواست دی تھی کہ پولیس جان بوجھ کر پرویز مشرف کے خلاف کارروائی نہیں کر رہی جس پر عدالت کے جج عباس شاہ نے متعقلہ پولیس کو تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کی ہدایت کی۔

تھانہ سیکرٹریٹ کے انچارج قیصر گیلانی نے بی بی سی کو بتایا کہ سابق صدر کے خلاف مقدمہ ضابطہ فوجداری کی دفعہ 344 کے تحت درج کیا گیا تھا جو کسی کو زبردستی حبس بےجا میں رکھنے کے زمرے میں آتا ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ پولیس ملزم کے دستیاب گھر کے پتے پر چھاپہ مارے گی۔

یاد رہے کہ پرویز مشرف کو راولپنڈی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت نے سابق وزیر اعظم بینظیر بھٹو کے قتل کے مقدمے میں اشتہاری قرار دیا ہوا ہے۔ سابق فوجی صدر ان دنوں ملک سے باہر ہیں اور موجودہ حکومت نے اُن کی گرفتاری کے لیے انٹرپول کو خط بھی لکھا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔