خیبر ایجنسی: مغوی سکھ حکیم ہلاک

آخری وقت اشاعت:  بدھ 9 جنوری 2013 ,‭ 17:48 GMT 22:48 PST
فائل فوٹو

پاکستان کے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں ایک سکھ حکیم کو اغوا کیے جانے کے ایک ماہ بعد ہلاک کر دیا گیا ہے۔ ایسی اطلاعات ہیں کہ شدت پسندوں کے ایک گروپ نے مبینہ طور پر مہندر سنگھ کو دوسرے گروپ کے لیےجاسوسی کرنے کے الزام میں قتل کیا ہے۔

مہندر سنگھ کی آخری رسومات اٹک میں سکھوں کےشمشان گھاٹ اد کر دی گئی ہیں۔

مہندر سنگھ کا جمرود میں چورہ کے مقام پر مطب تھا اور وہ روزانہ پشاور سے جمرود جا کر حکمت کیا کرتے تھے۔ ایک ماہ پہلے انھیں نامعلوم افراد نے اغوا کر لیا تھا۔

گزشتہ روز جمرود کے قریب سے ان کی تشدد زدہ لاش ملی ہے جس کے ساتھ مقامی لوگوں کے مطابق ایک تحریری بیان بھی پڑا تھا۔

لوگوں نے بتایا ہے کہ تحریری بیان ایک مسلح تنظیم کی جانب سے ہے جس میں کہا گیا ہے کہ مہندر سنگھ ان کی مخالف تنظیم کے لیے جاسوسی کا کام کیا کرتا تھا جس وجہ سے اسے قتل کر دیا گیا ہے۔

پولیٹکل انتظامیہ کے حکام سے اس بارے میں رابطے کی بار ہا کوشش کی لیکن ان سے رابطہ نہیں ہوسکا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔