شمالی وزیرستان: ریموٹ کنٹرول دھماکہ، ’چودہ فوجی ہلاک‘

آخری وقت اشاعت:  اتوار 13 جنوری 2013 ,‭ 11:16 GMT 16:16 PST

لاشوں اور زخمیوں کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے بنوں منتقل کیا گیا ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان کی انتظامیہ کے مطابق میرانشاہ کے قریب فوجی قافلے پر ریموٹ کنٹرول دھماکے کے نتیجے میں چودہ فوجی اہلکار ہلاک اور اکیس زخمی ہوئے ہیں۔

ہمارے نمائندے کے مطابق یہ واقعہ شمالی وزیرستان کے علاقے صدر مقام میران شاہ سے تقریباً پینتیس کلو میٹر جنوب کی جانب ایشا کے علاقے میں پیش آیا۔

تاہم پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق فوجی قافلے کی گاڑی بارودی سرنگ سے ٹکرانے کے نتیجے میں چار فوجی ہلاک اور گیارہ زخمی ہوئے ہیں۔

شمالی وزیرستان کی انتظامیہ کہ مطابق صبح ہی سے میرانشاہ اور اس کے ملحقہ علاقوں میں کرفیو نافذ تھا۔ سڑکوں پر ٹریفک نہیں تھی اور لوگ گھروں میں محسور ہو کر رہ گئے ہیں۔

لاشوں اور زخمیوں کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے بنوں منتقل کیا گیا ہے۔

نامہ نگار کا کہنا ہے کہ شمالی وزیرستان میں گزشتہ شب کالعدم تحریک طالبان پاکستان کےسربراہ حکیم اللہ محسود کی جانب سے پمفلٹ تقسیم ہوئے تھے۔ ان پمگلٹس میں مختلف تنظیموں سے کہا گیا تھا کہ وہ اپنے اختلافات بھول کر ایک ساتھ کام کریں۔

اسی پمفلٹ میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ شمالی وزیرستان میں طالبان پاکستانی فوج پر حملہ نہیں کرے گی۔ اور تنظیم کی پوری توجہ افغانستان میں افغان سکیورٹی فورسز اور بین الاقوامی اتحادی افواج پر حملوں پر ہو گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔