انصار الاسلام اور طالبان میں جھڑپیں 34 ہلاک

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 26 جنوری 2013 ,‭ 12:49 GMT 17:49 PST

احسان اللہ احسان کے مطابق علاقے میں امن کی خاطر طالبان نے انصار الاسلام کے ساتھ معاہدہ کیا تھا جس کی خلاف ورزی پر یہ کارروائی کی گئی

پاکستان میں وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں تیرہ کے علاقے میں دو متحارب گروہوں کے درمیان جاری جھڑپوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد چونتیس ہوگئی ہے جبکہ چالیس کے قریب افراد زخمی بتائے جاتے ہیں۔

کالعدم تحریکِ طالبان کے ترجمان احسان اللہ احسان کے مطابق ان حملوں کی وجہ دونوں تنظیموں کے درمیان موجود امن معائدے کا خاتمہ ہے۔

خیبر ایجنسی مقامی انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق یہ جھڑپیں کالعدم تنظیم انصار الاسلام اور کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے درمیان خیبر ایجنسی کی دور افتادہ علاقے تیرہ وادی میں ہوئی ہیں۔ حکام نے کہا کہ گزشتہ روز سے جاری یہ جھڑپیں تیرہ کے تین مختلف علاقوں بر قمبر خیل، ملک دین خیل اور اکا خیل ہوئی ہیں۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ جھڑپوں کے دوران دونوں طرف سے چھوٹے بڑے خود کار اسلحہ کا آزادانہ استعمال کیاگیا جس کے نتیجے میں عام شہری بھی نشانہ بنے ہیں۔ اہلکار کے مطابق بھاری اسلحہ کے درجنوں گولے مقامی آبادی پر گرنے سے کئی مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

دوسری جانب سکیورٹی فورسز کے ذرائع کا کہنا ہے کہ تیرہ وادی میں گزشتہ روز صُبح سویرے کالعدم تحریک طالبان اور لشکر اسلام نے مشترکہ طور پر دہشت گردی کی کارروائی میں اٹھارہ عام شہریوں کو ہلاک کر دیا جس میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔

سکیورٹی فورسز کے مطابق ان جھڑپوں میں تیس کے قریب عام شہری شدید زخمی بھی ہوئے اور کہا ہے کہ ہلاک اور زخمی ہونے والوں کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

سکیورٹی فورسز کا کہنا تھا کہ اس علاقے میں سکیورٹی فورسز کے اہلکار موجود نہیں ہیں اور علاقے میں موجود امن کمیٹیوں کے لوگ علاقے میں امن قائم کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔

دوسری جانب کالعدم تحریکِ طالبان پاکستان کے ترجمان احسان اللہ احسان کے مطابق علاقے میں امن کی خاطر طالبان نے انصار الاسلام کے ساتھ معاہدہ کیا تھا جس کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ان کے مطابق پچھلے دنوں انصار الاسلام نے معاہدے کی خلاف ورزی کی اور انتیس طالبان کو ہلاک کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ انصار الاسلام نے اس کارروائی کے بعد راستے بھی بند کردیے تھے اس لیے طالبان نے جوابی کارروائی کا فیصلہ کیا۔

ریڈیو پاکستان کے مطابق باڑہ تحصیل کے علاقے جبا میں ایک اور واقعے میں خاصہ دار فورس نے ایک گاڑی پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں تین افراد زخمی ہوئے۔

خاصہ داروں نے گاڑی کو رکنے کا اشارہ کیا لیکن یہ گاڑی نہ رکی جس پر فائرنگ کی گئی۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔