کوئٹہ میں فائرنگ سے دو پولیس اہلکار ہلاک

آخری وقت اشاعت:  منگل 29 جنوری 2013 ,‭ 18:28 GMT 23:28 PST

بلوچستان میں پولیس اہلکاروں پر حملوں کے کئی واقعات پیش آ چکے ہیں

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں فائرنگ کے ایک واقعے میں دو پولیس اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیقات کے مطابق یہ ٹارگٹ کلنگ کا واقعہ ہے اور ہلاک ہونے والے پولیس اہلکاروں کا تعلق ہزارہ برادری سے ہے۔

دریں اثناء ضلع خضدار میں الیکشن کمیشن کے دفتر پر دستی بم سے حملہ کیا گیا ہے۔

کوئٹہ میں پولیس اہلکاروں پر حملے کا واقعہ منگل کو ارباب کر م خان روڈ پر پر پیش آیا۔

پولیس کے مطابق بروری پولیس سٹیشن کے دو اہلکار ایک موٹر سائیکل پر ارباب کرم خان روڑ سے گزر رہے تھے کہ نامعلوم مسلح افراد نے ان پر فائرنگ کر دی۔

پولیس حکام کے مطابق فائرنگ کے نتیجے میں دونوں اہلکار ہلاک ہو گئے اور نامعلوم حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔

بلوچستان میں گورنر راج کے نفاذ کے بعد کوئٹہ میں تشدد کا یہ پہلا واقعہ ہے جس میں پولیس اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔

دریں اثناء صوبے کے دوسرے شہر خضدارمیں نامعلوم مسلح افراد نے الیکشن کمیشن کے دفتر پر دستی بم سے حملہ کیا ہے۔

اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم دفتر کی عمارت کو جزوی نقصان پہنچا۔

ادھر کوہلو سے متصل علاقے میں فرنٹیئر کور کی ایک چیک پوسٹ پر حملے میں ایک اہلکار زخمی ہو گیا۔

کوہلو میں ایف سی چیک پوسٹ پر حملے کی ذمہ داری یونائیٹد بلوچ لبریشن نامی تنظیم نے قبول کی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔