بلوچستان: گوادر میں فائرنگ، چھ مزدور ہلاک

آخری وقت اشاعت:  اتوار 24 فروری 2013 ,‭ 06:43 GMT 11:43 PST

ضلعی اہلکار کا کہنا تھا اس واقعہ کی اطلاع ملتے ہی سکیورٹی فورسز کے اہلکار اس علاقے میں پہنچ گئے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے علاقے گوادر میں حکام کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے نتیجے میں چھ مزدور ہلاک ہو گئے ہیں۔

یہ واقعہ سینیچر اور اتوار کی درمیانی شب گوادر کی تحصیل پسنی میں کوسٹل ہائی وے پر پیش آیا۔

کوئٹہ میں صحافی کے مطابق تین نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے شادی کور کے مقام پر چھ مزدوروں کو فائرنگ کا نشانہ بنایا۔

گوادر کے ضلعی انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ گوادر کے علاقے شادی کور میں کوسٹل ہائی وے کے بعض حصے خراب ہوگئے تھے جس کی مرمت کے لیے ایک ٹھیکدار ان مزدوروں کو ایک روز قبل لایا تھا۔

واضح رہے کہ یہ ہائی وے گوادر کی پورٹ سٹی کو کراچی سے ملاتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ رات کو نامعلوم افراد موٹر سائیکلوں پر آئے اور انہوں نے ان مزدوروں پر اندھا دھند فائرنگ کی تھی۔

شدید فائرنگ کے نتیجے میں وہاں موجود تمام مزدور موقع پر ہی ہلاک ہوئے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ ان مزدوروں کے ساتھ ایک بارہ سالہ بچہ بھی تھا لیکن حملہ آوروں نے بچے کو نہیں مارا۔

ضلعی اہلکار کا کہنا تھا اس واقعہ کی اطلاع ملتے ہی لیویز فورس کے اہلکار اس علاقے میں پہنچ گئے اور ہلاک ہونے والے افراد کی لاشوں کو پسنی ہسپتال پہنچایا۔

ہلاک ہونے والے تمام افراد کا تعلق شمال مشرق میں وزیرستان سے متصل بلوچستان ہی کے علاقے ژوب سے بتایا جاتا ہے۔

اہلکار نے بتایا کہ ان مزدوروں کو ایک ٹھیکیدار مقامی انتظامیہ کو اطلاع دیے بغیر یہاں کام کے لیے لائے تھے۔

ضلع گوادر بلوچستان کے مکران ڈویژن کا حصہ ہے۔ مکران کا شمار بھی بلوچستان کے شورش زدہ علاقوں میں ہوتا ہے۔

اس سے قبل بھی مکران ڈویژن کے تینوں اضلاع کیچ، پنجگور اورگوادر میں سڑکوں کی تعمیر کے علاوہ دیگر تعمیراتی کمپنیوں پر کام کرنے والے افراد کو اس قسم کی کاروائیوں کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔