لاہور: سربجیت پر لکھی کتاب کی تقریب منسوخ

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 2 مارچ 2013 ,‭ 20:11 GMT 01:11 PST
سربجیت سنگھ کے خاندان والے

سربجیت سنگھ کو اکیس سال پہلے سزائے موت سنائی گئی تھی

پاکستان میں سزائے موت کے قیدی سربجیت سنگھ کے وکیل اویس شیخ کو لاہور پریس کلب میں داخلے سے روک کر کلب میں ان کی کتاب کی ہونے والی تقریب منسوخ کردی گئی ہے۔

اویس شیخ ایڈووکیٹ نے بتایا کہ لاہور پریس کلب کی انتظامیہ نے سربجیت سنگھ کے بارے میں کتاب کی تقریب کو سکیورٹی کے خطرات کے پیش نظر منسوخ کردیا۔

سربجیت سنگھ کے مقدمے کے بارے میں انگریزی میں لکھی جانے والی کتاب کی تقریب جمعہ کو لاہور پریس کلب میں ہونی تھی۔

اس سے پہلے اویس شیح ایڈووکیٹ اکیلے اور اپنے موکل سربجیت سنگھ کے گھر والوں کے ساتھ مل کر لاہور پریس کلب میں کئی پریس کانفرنسوں سے خطاب کرتے رہے ہیں اور یہ پہلا موقع ہے کہ ان کی کتاب کی تقریب کو لاہور پریس کلب انتظامیہ نے منسوخ کیا۔

یہ کتاب سربجیت سنگھ کے وکیل اویس شیخ ایڈووکیٹ نے لکھی ہے اور مصنف کے مطابق بھارت میں شائع ہونے والے اس کتاب کا ہندی میں بھی ترجمہ ہوا ہے۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے اویس شیخ ایڈووکیٹ نے بتایا کہ انہوں نے ایک ماہ پہلے سربجیت سنگھ کے مقدمے کے بارے میں لکھی جانے والی کتاب کی تقریب کے لیے پریس کلب میں ہال کی بکنگ کرائی تھی۔

احتجاج

اویس شیح ایڈووکیٹ نے لاہور پریس کلب انتظامیہ کے فیصلے پر احتجاج کیا اور کلب کی انتظامیہ کی طرف سے مرکزی دروازے پر لگائے اپنے داخلے کی پابندی اور تقریب کی منسوخی کے نوٹس کو پھاڑ دیا

سربجیت سنگھ کے وکیل کے مطابق وہ جمعہ کو کتاب کی تقریب کے لیے لاہور پریس کلب پہنچے تو کلب کے مرکزی دروازے کو تالے لگا کر بند کردیا گیا تھا اور انہیں کلب کے انتظامیہ نے بتایا کہ ان کی کتاب کی تقریب کو منسوخ کردیا گیا ہے

اویس شیح ایڈووکیٹ نے لاہور پریس کلب انتظامیہ کے فیصلے پر احتجاج کیا اور کلب کی انتظامیہ کی طرف سے مرکزی دروازے پر لگائے اپنے داخلے کی پابندی اور تقریب کی منسوخی کے نوٹس کو پھاڑ دیا۔

ان کے بقول تقریب میں سپریم کورٹ بار کے سابق صدر حامد خان اور انسانی حقوق کمیشن کے سیکرٹری آئی اے رحمان خطاب کرنے والے تھے۔

سربجیت سنگھ کے وکیل نے کہا کہ وہ ہنگامی طور پر یہ تقریب کسی اور مقام پر منتقل نہیں کرسکے۔ اویس شیخ ایڈووکیٹ نے پریس کلب کے باہر اپنے مہمانوں کا انتظار کیا اور وہاں شرکت کے لیے آنے والے مہمانوں سے تقریب منسوخ ہونے پر معذرت کی۔

ادھر لاہور پریس کلب انتظامیہ کا کہنا ہے کہ انہیں یہ خدشہ تھا کہ کتاب کی تقریب کے باعث مذہبی تنظیموں کی طرف سے سکیورٹی کے مسائل پیدا ہوسکتے ہیں اور اسی بنا پر تقریب کو منسوخ کردیا گیا۔

اویس شیخ ایڈووکیٹ نے بتایا کہ انہوں نےتین سال کی محنت کے بعد یہ کتاب لکھی تھی جو کسی کے خلاف نہیں ہے۔ سربجیت کے وکیل کے بقول بھارت کے چھ شہروں میں اس کے کتاب کی رونمائی کی تقریبات ہوچکی ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔