لکی مروت میں لڑکوں کا سکول تباہ

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 1 مارچ 2013 ,‭ 08:26 GMT 13:26 PST

خیبر پختونخوا اور قبائلی علاقوں میں سکولوں پر حملوں کا سلسلہ چھ سال سے جاری ہے

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع لکی مروت میں حکام کے مطابق نامعلوم افراد نے لڑکوں کے ایک پرائمری سکول کو دھماکے سے تباہ کر دیا ہے۔

دریں اثناء قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں سکیورٹی فورسز نے جیٹ طیاروں سے شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی ہے۔

پولیس اہلکار رسول خان نے بی بی سی کو بتایا کہ جمعہ کی صبح چار بجے کے قریب تھانہ غزنی خیل سے کوئی دس کلومیٹر دور شمال مشرقی علاقے وانڈہ زیڑانہ میں مُسلح افراد نے لڑکوں کے پرائمری سکول کو دھماکے سے تباہ کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ سکول کے دو کمرے مکمل طور پر تباہ جبکہ چار دیواری کو کافی نقصان پہنچا ہے۔

اہلکار کے مطابق دھماکے میں جانی نقصان اس لیے نہیں ہوا ہے کیونکہ وہاں کوئی شخص موجود نہیں تھا۔

اس واقعہ کی ابھی تک کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے البتہ اس واقعہ سے چند مہینے پہلے لکی مروت کے مختلف علاقوں میں ایک ہی رات میں چار سکولوں کو دھماکوں سے اڑا دیا گیا تھا۔

تحریک طالبان ضلع لکی مروت کے ترجمان نے اپنی تنظیم کی طرف سے ان حملوں کی ذمہ داری سے قبول کی تھی۔

صوبہ خیبر پختونخوا اور قبائلی علاقوں میں سکولوں پر حملوں کا سلسلہ چھ سال سے جاری ہے۔

اس سے پہلے قبائلی علاقوں میں سکولوں کو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے لیکن اب شہری علاقوں میں بھی سکولوں میں دھماکے کیے جا رہے ہیں۔

اس کے علاوہ جمعرات کو خیبر ایجنسی کے دور دارز علاقے تیراہ میں جیٹ طیاروں نے شدت پسندوں کے تین ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے جس میں تینوں ٹھکانے تباہ ہوگئے ہیں۔

ایک سرکاری اہلکار نے بتایا کہ تیراہ میں حکومت کا کوئی اہلکار موجود نہیں ہے اس لیے ہلاکتوں کا بھی معلوم نہیں ہورہا ہے کہ بمباری میں کتنے شدت پسند مارے گئے۔

تاہم مقامی انتظامیہ کے ایک اہلکار کا کہنا تھا کہ علاقے سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق بمباری میں آٹھ شدت پسند ہلاک ہوگئے ہیں لیکن آزاد ذرائع سے اس کی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔