’شفاف الیکشن زندگی کا آخری معرکہ‘

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 8 مارچ 2013 ,‭ 09:08 GMT 14:08 PST

’قوم عرصے سے جن آزادانہ، منصفانہ اور شفاف انتخابات کا خواب دیکھ رہی ہے (فخر الدین جی ابراہیم) اس کو پورا کر کے رہیں گے‘

پاکستان کے آنے والے انتخابات فخرالدین جی ابراہیم کی زندگی کا آخری معرکہ ہیں جو وہ ہر حال میں سر کرنا چاہتے ہیں۔ یہ بات سیکریٹری الیکشن کمیشن اشتیاق احمد خان نے کہی ہے۔

بی بی سی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ملک میں انتخابات کے لیے سکیورٹی قائم کرنا حکومت کا کام ہے، ہمارا نہیں، لیکن ہم صوبائی حکومتوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ اجلاس کرنے جا رہے ہیں اور جہاں ضرورت پڑے گی، فوج کو بھی بلائیں گے۔

جمعرات کے روز ساؤتھ ایشن فری میڈیا ایسوسی ایشن یعنی سیفما کے سینیئر صحافیوں کے وفد نے آنے والے انتخابات کے بارے میں ایک ضابطۂ اخلاق چیف الیکشن کمیشنر کو پیش کیا جس میں زور دیا گیا ہے کہ صاف شفاف اور منصفانہ انتخابات کے لیے صحافیوں کو اپنا کام آزادی اور ذمے داری سے کرنے کا بھرپور موقع فرام کرنے کی ضرورت ہے۔

فخرالدین جی ابراہیم نے اس بات کو سراہا اور اپنی تجاویز پیش کیں۔ طبیعت کی خرابی کے باعث وہ زیادہ نہیں بول پائے لیکن جب سوال اٹھایا گیا کہ موجودہ حالات میں انتخابات ہو بھی پائیں گے یا نہیں تو انھوں نے کہا کہ منفی بات نہ کریں، الیکشن ہونے جا رہے ہیں اور آپ کو پتا ہونا چاہیے کہ یہ کتنے ضروری ہیں، ہمارا پورا مستقبل انہی پر منحصر ہے۔

کہا جا رہا ہے کہ آنے والے انتخابات پاکستان کی تاریخ کے مشکل ترین انتخابات ہوں گے جن میں چیف الیکشن کمیشن کے کردار کو نہایت باریک بینی سے دیکھا جا رہا ہے۔

"فخرالدین جی ابراہیم کی زندگی ایک کھلی کتاب ہے اور پوری قوم کو ان پر اعتماد ہے۔"

سیکرٹری الیکشن کمیشن اشتیاق احمد خان

تاہم سیکرٹری الیکشن کمیشن اشتیاق احمد نے وضاحت کی کہ ہم پر کسی قسم کا دباؤ نہیں ہے اور نہ ہم دباؤ قبول کریں گے۔ انھوں نے زور دیا کہ ہم تین برسوں سے تیاری کر رہے ہیں اور ایسا سسٹم بنا چکے ہیں جس میں دھاندلی کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

جب ان سے پوچھا گیا کہ چیف الیکشن کمیشنر چار بار استعفے کی پیشکش کر چکے ہیں تو انھوں نے کہا کہ فخرالدین جی ابراہیم کی زندگی ایک کھلی کتاب ہے اور پوری قوم کو ان پر اعتماد ہے۔

انھوں نے کہا کہ قوم عرصے سے جن آزادانہ، منصفانہ اور شفاف انتخابات کا خواب دیکھ رہی ہے وہ اس کو پورا کر کے رہیں گے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔