’ہم اپنی کوششوں میں بڑی حد تک کامیاب رہے‘

آخری وقت اشاعت:  بدھ 13 مارچ 2013 ,‭ 11:12 GMT 16:12 PST
راجہ پرویز اشرف

راجہ پرویز اشرف نے کابینہ سے خطاب کرتے ہوئے جمہوری حکومت کی مدت کی تکمیل پر مبارکباد پیش کی

پاکستان کے وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے کابینہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ پاکستان کا ایک تاریخ ساز دن ہے کیونکہ آج جمہوری حکومت نے اپنی مدت پوری کی ہے۔

اس موقعے پر انھوں صوبائی حکومتوں، سول سروسز حکام، فوج اور سکیورٹی ایجنسیوں کا شکریہ ادا کیا جنھوں نے گذشتہ پانچ برسوں میں حکومت کو اپنی مدت پوری کرنے میں تعاون فراہم کیا۔

انھوں نے کہا کہ جمہوری حکومت مسلسل اسلامی تعلیمات اور جمہوری اقدار کے منافی دہشت گردی سے لڑتی رہی ہے۔

’ہمیں تمام تر ریاستی شعبوں کا سرگرم تعاون ملا ہے۔ ہم اپنی کوششوں میں بڑی حد تک کامیاب رہے ہیں اور دہشت گردی اور عسکریت پسندی کی تباہی، اور ان کو تمام شکلوں میں پوری طرح سے ختم کرنے کے لیے ابھی موثر اقدام کیے جانے کی ضرورت ہے تاکہ شدت پسند اپنا ایجنڈا ہم پر نہ لاد سکیں۔‘

پشاور اور کراچي کے حالیہ واقعات پر انھوں نے کہا، ’دہشت گرد ان حملوں کے ذریعے معصوم لوگوں کی حوصلہ شکنی کے لیے اور اپنے وجود کو ثابت کرنے کی آخری کوشش کر رہے ہیں۔‘

انھوں نے لاہور میں عیسائیوں کی کالونی پر ہونے والے حملے پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ’عیسائی اس ملک میں برابر کے شہری ہیں اور انہیں مکمل تحفظ فراہم کیا جائے گا۔‘

"میں اپنے عیسائی بھائیوں اور بہنوں کی یقین دہانی کرانا چاہتا ہوں کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے تعاون سے ان کی املاک کی ممکنہ بھرپائی کی جائے گی۔ میں یہ بھی یقین دلاتا ہوں کہ مجروموں کو عبرت ناک سزا دی جائے گی"

راجہ پرویز اشرف

’قائد اعظم محمد علی جناح کے عزم اور اسلامی تعلیمات کے تحت پاکستان میں اقلیتوں کو مساوی حقوق حاصل ہیں اور حکومت کسی کو بھی قانون اپنے ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دے گی۔‘

وزیر اعظم کا کہنا تھا ’میں اپنے عیسائی بھائیوں اور بہنوں کو یقین دہانی کرانا چاہتا ہوں کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے تعاون سے ان کی املاک کی ممکنہ بحالی کی جائے گی۔ میں یہ بھی یقین دلاتا ہوں کہ مجرموں کو عبرتناک سزا دی جائے گی۔‘

انھوں نے کہا کہ اسلام رواداری کا درس دیتا ہے اور بلا تفریق مذہب و ملت تمام شہریوں کے جان اور املاک کی حفاظت کی یقین دہانی کرتا ہے۔

وزیر اعظم نے اس موقعے سے علما سے اپیل کی کہ وہ مذہبی رواداری کے فروغ کے لیے حکومت سے تعاون کریں۔

انھوں نے کہا کہ اس طرح کے تشدد کے واقعات بین الاقوامی سطح پر ہماری منفی شبیہ پیش کرتے ہیں۔

اس موقعے سے راجہ پرویز اشرف نے انتخابات اور پاکستان ایران گیس پائپ لائن پروجیکٹ کے بارے میں بھی بات کی۔

انھوں نے کہا کہ اس پروجیکٹ سے جہاں دونوں ممالک کی معیشت کو تقویت ملے گی بلکہ علاقے میں خوشحالی بھی آئے گی۔

انھوں نے کہا کہ اس پروجیکٹ کو قومی مفاد میں ترجیحی بنیاد پر پورا کیا جائے گا تاکہ ملک کو درپیش توانائی کا دیرینہ مسئلہ حل ہو سکے اور یہ علاقائی تعاون اور اقتصادی ترقی کا پیش خیمہ ثابت ہو۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔