پروین رحمان سپردِ خاک، قتل کی مذمت

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 14 مارچ 2013 ,‭ 10:17 GMT 15:17 PST

پروین رحمان غریب اور محروم طبقات کی حقوق کی علمبردار تھیں: ایچ آر سی پی

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں بدھ کو ہدف بنا کر قتل کی جانے والی سماجی کارکن پروین رحمان کو سپردِ خاک کر دیا گیا ہے اور پاکستان کے انسانی حقوق کے کمیشن نے ان کی ہلاکت کی شدید مذمت کی ہے۔

اورنگی پائلٹ پراجیکٹ کی ڈائریکٹر پروین رحمان کو بنارس فلائی اوور کے قریب نامعلوم مسلح افراد نے اس وقت فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا تھا جب وہ اپنے دفتر سے گھر جا رہی تھیں۔

پروین رحمان کی نمازِ جنازہ جمعرات کو گلستان جوہر میں ادا کی گئی اور انہیں محمد شاہ قبرستان میں سپردِ خاک کیا جا رہا ہے۔

ان کے جنازے میں ان کے اعزاء و اقربا کے علاوہ سول سوسائٹی کے ارکان بھی موجود تھے۔

پاکستان میں حقوقِ انسانی کی تنظیم ایچ آر سی پی نے جمعرات کو جاری ہونے والے ایک بیان میں اس ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’آزادی، انصاف اور انسانی حقوق پر یقین رکھنے والے شہریوں کو اس دشمن کے خلاف اٹھ کھڑا ہونا چاہیے جو امید کی نشانیاں ختم کرنا چاہتا ہے۔‘

ایچ آر سی پی نے کہا ہے کہ پروین رحمان غریب اور محروم طبقات کی حقوق کی علمبردار تھیں، انہوں نے تیس سال تک تمام خطرات کو نظر انداز کر کے ان طبقات کی فلاح اور بہبود کے لیے کام کیا۔

سندھ اسمبلی میں بھی پروین رحمان کے لیے فاتحہ خوانی کی گئی اور مطالبہ کیا گیا کہ ملزمان کو گرفتار کیا جائے۔

کراچی پولیس نے پروین رحمان کی ہلاکت کا مقدمہ نامعلوم افراد کے خلاف درج کر لیا ہے

ڈی آئی جی غربی جاوید اوڈھو نے بدھ کو ایک پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ اورنگی ٹاؤن میں پولیس اور رینجرز کے آپریشن کے دوران ہلاک ہونے والے قاری بلال نامی شخص کی اس واقعے میں ملوث ہونے کے بارے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

پولیس اور رینجرز کے اس آپریشن میں ایک درجن سے زائد مشتبہ افراد کو حراست میں لیا گیا اور اسی آپریشن کے دوران منگھو پیر کے علاقے میں پولیس مقابلے میں قاری بلال ہلاک ہوا تھا۔

پولیس کا دعویٰ ہے کہ قاری بلال کا تعلق ایک کالعدم تنظیم سے تھا اور وہ پولیس اہلکاروں کے قتل میں بھی ملوث تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔