پشاور:عدالتی کمپلیکس میں خودکش حملہ، چھ ہلاک

آخری وقت اشاعت:  پير 18 مارچ 2013 ,‭ 10:07 GMT 15:07 PST

ڈپٹی کمشنر پشاور جاوید مروت نے بی بی سی کو بتایا کہ اس دھماکے میں تین افراد ہلاک اور انتیس زخمی ہوگئے ہیں

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں خودکش حملے اور فائرنگ سے چار عام شہریوں سمیت چھ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

مقامی پولیس کے مطابق دو خودکش حملہ آوروں نے پیر کو خیبر روڈ پر واقع جوڈیشل کمپلیکس میں ایک عدالت میں گھسنے کی کوشش کی۔

روکے جانے پر ایک خودکش حملہ آور نے اپنے آپ کو دھماکے سے اْڑایا اور دوسرے حملہ آور کو پولیس نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا۔

دوسری جانب اس حملے کی ذمہ داری کالعدم تنظیم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کی ہے۔ تحریک طالبان پاکستان کے ترجمان احسان اللہ احسان نے فون پر بی بی سی کو بتایا کہ یہ حملہ ان کے عافیہ صدیقی بریگیڈ نے کیا ہے کیونکہ ملک کی عدلیہ نے عافیہ صدیقی کا دفاع ٹھیک طریقے سے نہیں کیا۔

ہمارے نمائندے کے مطابق جوڈیشل کمپلیکس میں عدالتیں ایک دوسرے سے منسلک ہیں جس کی وجہ سے وہاں بہت بھیڑ بھار ہوتی ہے اور یہ دھماکا پیر کو عدالتی اوقات کے دوران ہوا ہے۔

ڈپٹی کمشنر پشاور جاوید مروت نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے ابتدائی طور پر دھماکے میں تین افراد کی ہلاکت اور 29 کے زخمی ہونے کی تصدیق کی۔

دھماکے کے بعد لاشوں اور زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔ ہسپتال کے ذرائع کا کہنا ہے کہ ہسپتال میں چار لاشیں لائی گئی ہیں جن میں سے تین کی شناخت ہو چکی ہے۔

حملہ آوروں کی تعداد کے بارے میں متضاد اطلاعات موصول ہو رہی ہیں اور جہاں ڈپٹی کمشنر نے یہ تعداد پانچ سے سات بتائی ہے وہیں پولیس کے ذرائع کا کہنا ہے کہ حملہ آور دو ہی تھے جو ہلاک ہو چکے ہیں۔

پشاور کے ڈپٹی کمشنر کے مطابق سکیورٹی فورسز عدالتی کمپلیکس کے اندر سرچ آپریشن کر رہی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ جوڈیشل کمپلیکس کی تلاشی لی جا رہی ہے اور عام شہریوں اور عدالتی عملے کو وہاں سے نکالا گیا ہے۔

اس سے پہلے صوبہ خیبر پختون خوا کے وزیر اطلاعات نے میڈیا کو بتایا کہ اس واقعے میں دو افراد ہلاک ہو گئے ہیں اور شدت پسندوں نے کئی لوگوں کو یرغمال بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں بتایا گیا کہ یہ خود کش حملہ تھا۔

پولیس اور فوج نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ جس جگہ حملہ ہوا ہے وہ انتہائی حساس علاقہ ہے اور جوڈیشل کمپلیکس کے قریب کور کمانڈر پشاور کا گھر اور صوبائی اسمبلی واقع ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔