پنجاب: نگران وزیر اعلیٰ کے لیے پی پی کے تین نام

آخری وقت اشاعت:  پير 18 مارچ 2013 ,‭ 14:53 GMT 19:53 PST

پیپلز پارٹی نے عاصمہ جہانگیر کے علاوہ میاں عامر محمود اور حفیظ رندھاوا کے نام بھی تجویز کیے ہیں

پاکستان کے صوبہ پنجاب میں حزب مخالف کی جماعت پیپلز پارٹی نے صوبے میں نگران وزیراعلیٰ کے عہدے کے لیے ایک خاتون سمیت تین نام حکمران جماعت مسلم لیگ نون کو پیش کردیے ہیں۔

قائد حزب مخالف راجہ ریاض نے وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو ایک خط کے ذریعے نگران وزیر اعلیٰ کے ناموں کے بارے میں آگاہ کیا ہے۔

پنجاب اسمبلی میں حزب مخالف کی جماعت پیپلز پارٹی ڈپٹی پارلیمانی لیڈر شوکت بسر ا کے مطابق ان کی جماعت نے نگران وزیر اعلیٰ کے عہدے کے لیے عاصمہ جہانگیر، میاں عامر محمود اور حفیظ رندھاوا کے نام تجویز کیے ہیں۔

اس سے پہلے حکمران جماعت مسلم لیگ نون نے نگران وزیر اعلیٰ پنجاب کے لیے جسٹس ریٹائرڈ عامر رضا خان اور سابق بیوروکریٹ خواجہ ظہیر کے نام تجویز کیے تھے۔

شوکت بسرا نے بی بی سی کو بتایا کہ نگران وزیر اعلیٰ کے نام تجویز کرنے سے پہلے مسلم لیگ قاف سے بھی مشاورت کی گئی ہے۔

عاصمہ جہانگیر سپریم کورٹ بار اور انسانی حقوق کمیشن کی سابق سربراہ ہیں۔

میاں عامر محمود جنرل مشرف دور میں دو مرتبہ لاہور کے ضلعی ناظم رہے ہیں اور نجی ٹی وی کے سربراہ ہیں۔

حفیظ رندھاوا پنجاب کے سابق چیف سیکریٹری رہ چکے ہیں اور ان کا شمار سابق فوجی صدر جنرل پرویز مشرف کے قریبی لوگوں میں ہوتا ہے۔

جماعت اسلامی نے نگران وزیر اعلیٰ پنجاب کے سابق چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس میاں اللہ نواز اور سابق بیورو کریٹ صفدر محمود کے نام تجویز کیے تھے۔

پنجاب اسمبلی کی آئینی مدت نو اپریل کو مکمل ہورہی ہے۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔