نگران حکومت: سندھ میں حلف برداری، بلوچستان میں اتفاق

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 21 مارچ 2013 ,‭ 12:10 GMT 17:10 PST

نواب غوث بخش باروزئی کے نام پر حکومت اور حزبِ اختلاف دونوں نے اتفاق کیا ہے۔

پاکستان کے صوبہ سندھ میں ریٹائرڈ جسٹس قربان علوی نے نگران وزیراعلیٰ کے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے جبکہ بلوچستان میں نگران وزیراعلیٰ کے عہدے کے لیے نواب غوث بخش باروزئی کے نام پر اتفاق کر لیا گیا ہے۔

صوبہ سندھ کے گورنر ڈاکٹر عشرت العباد نے ان سے نگران وزیر اعلیٰ کے عہدے کا حلف لیا جبکہ اس تقریب میں سابق صوبائی وزیر اعلیٰ سیدقائم علی شاہ، سابق ارکان صوبائی اسمبلی ، سپیکر نثار احمد کھوڑو نے بھی شرکت کی۔

دوسری جانب بلوچستان میں صوبائی حکومت اور حزبِ اختلاف نے نگران وزیراعلیٰ کے عہدے ک لیے نواب غوث بخش باروزئی کے نام پر اتفاق کیا گیا ہے۔

کوئٹہ میں وزیر اعلیٰ ہاؤس میں منعقد ہونے والی ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سابق سینئر صوبائی وزیر مولانا عبدالواسع نے اس بات کا اعلان کیا۔

ان کے ساتھ اس پریس کانفرنس میں وزیراعلیٰ نواب اسلم رئیسانی بھی موجود تھے۔

نواب غوث بخش باروزئی کا تعلق بلوچستان کے ضلع سبی سے ہے اور یہ باروزئی قبیلے کے سربراہ ہیں۔

ان کے والد سردار محمد خان باروزئی بلوچستان اسمبلی کے سپیکر اور وزیر اعلیٰ رہ چکے ہیں۔ سردار محمد خان باروزئی کو بلوچستان اسمبلی کے پہلے سپیکر ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔

ریٹائرڈ جسٹس قربان علوی نے کراچی میں اپنے عہدے کا حلف اٹھایا۔

سندھ کے نگران وزیراعلیٰ جسٹس ریٹائرڈ قربان علوی نے حلف برداری کی تقریب کے بعد مزار قائد پر حاضری دی اور اس کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ شفاف انتخابات کے انعقاد کو یقینی بنانے کے لئے حاص طور پر کراچی اور عمومی طور پر صوبے بھر میں قیامِ امن کی حتی الامکان کوشش کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ وہ جلد ہی نگران کابینہ کے لیے مخلتف وزراء کا تقرر کریں گے۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔