پنجاب کی نگراں کابینہ نے حلف اٹھا لیا

Image caption پنجاب کے گورنر مخدوم احمد محمود نے نگراں کابینہ سے حلف لیا

پاکستان کے صوبہ پنجاب کی نگران کابینہ نے حلف اٹھا لیا ہے۔

چار ارکان پر مشتمل پنجاب کی نگراں کابینہ کی حلف برداری کی تقریب گورنر ہاؤس لاہور میں پیر کی صبح منعقد ہوئی۔

سرکاری ٹی وی پی ٹی وی کے مطابق نگراں کابینہ میں شمس محمود مرزا، سلیمہ ہاشمی، طارق پرویز اور عارف اعجاز شامل ہیں۔

پنجاب کے گورنر مخدوم احمد محمود نے نگراں کابینہ سے حلف لیا۔

نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب نجم سیٹھی نے گذشتہ ہفتے اپنے عہدے کا حلف اٹھانے کے بعد یہ اعلان کیا تھا کہ صوبائی نگراں کابینہ زیادہ بڑی نہیں بلکہ مختصر ہوگی۔

انہوں نے اپنے ایک انٹرویو میں یہ بھی کہا تھا کہ وہ صحافی ہونے کے ناطے اطلاعات کی وزرات اپنے پاس رکھیں گے۔

نگراں پنجاب کابینہ کی رکن سلیمہ ہاشمی ممتاز شاعر فیض احمد فیض کی بڑی بیٹی ہیں ۔ ان کا تعلق شعبہ تدریس سے ہے اور وہ نیشنل کالج آف آرٹس لاہور کی پرنسپل رہ چکی ہیں۔

سلیمہ ہاشمی نے پاکستان ٹیلی ویژن کے ابتدائی دنوں میں اپنے شوہر شعیب ہاشمی کے ساتھ ٹی وی پروگراموں میں بھی کام کیا۔

دوسرے نگراں وزیر شمس محمود مرزا پیشے کے اعتبار سے وکیل ہیں اور سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس ضیاء محمود مرزا کے بیٹے ہیں۔

شمس محمود مرزا آئینی امور کے علاوہ کارپویٹ سیکٹر کے جانے مانے وکیل ہیں۔ صوبائی کابینہ کے رکن شمس مرزا سینیئر صحافی فرح ضیاء کے بھائی اور معروف قانون دان سلمان اکرم راجہ کے قریبی رشتہ دار بھی بتائے جاتے ہیں۔

نگراں پنجاب کابینہ میں شامل تیسرے وزیر طارق پرویز سابق سول آفسر ہیں اور آئی جی پولیس کے علاوہ وفاقی تحقیقاتی ادارے یعنی ایف آئی اے کے سربراہ رہ چکے ہیں۔

طارق پرویز سال دو ہزار آٹھ میں ایف آئی اے کے ڈائریکٹر جنرل کے عہدے سے ریٹائر ہوئے تھے۔

پنجاب کی نگراں کابینہ کے چوتھے وزیر عارف اعجاز ماہر اقتصادیات اور ایک کاروباری شخصیت کے طور جانے جاتے ہیں۔ وہ معروف صعنت کار طارق سہگل کے ادارے سے وابستہ ہیں۔ اس سے پہلے وہ آدم جی انشورنس اور کے ایس پی کے مینجنگ ڈائریکٹر رہ چکے ہیں۔

ان کا شمار معروف کاروباری شخصیات میاں منشاء اور طارق سہگل کے قریبی حلقوں میں ہوتا ہے۔