نثار کی اپیل منظور، مشرف کو نوٹس جاری

Image caption چودھری نثار قومی اسمبلی کے دو حلقوں سے امیدوار ہیں

گیارہ مئی کو ہونے والے عام انتخابات کے لیے کاغذاتِ نامزدگی کی منظوری یا مسترد کیے جانے کے خلاف اپیلوں کی سماعت کے دوران لاہور ہائی کورٹ کے الیکشن ٹربیونل نے مسلم لیگ نون کے رہنما اور سابق قائد حزب مخالف چودھری نثار علی خان کی اپیل منظور کرتے ہوئے انہیں انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دی ہے۔

ٹربیونل نے ایک دوسرے حلقے سے چودھری نثار کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کی خلاف کی گئی اپیل بھی مسترد کردی۔

الیکشن ٹربیونل نے پنجاب کے ضلع قصور سے جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کے خلاف ان کی اپیل پر بارہ اپریل کے لیے نوٹس جاری کر دیے ہیں جبکہ چترال سے ان کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے خلاف دائر ہونے والی اپیلوں پر ان کو سولہ اپریل کے لیے نوٹس جاری کیے گئے ہیں۔

ادھر پیپلز پارٹی کے سابق رہنما اور رکن قومی اسمبلی جمشید دستی نے اپنی رہائی کے بعد مظفر گڑھ کے دو حلقوں سے انتخاب لڑنے کا اعلان کیا ہے ۔

ان کے وکیل شیخ جمشید حیات کے مطابق جمشید دستی نے اپنے کاغذات نامزدگی مسترد کیے جانے کے اقدام کو الیکشن ٹربیونل پر چیلنج کیا اور اس پر پندرہ اپریل کے لیے نوٹس بھی جاری ہوچکے ہیں۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے جمشید دستی کے وکیل نے بتایا کہ ان کے موکل کے کاغذات نامزدگی جعلی ڈگری کیس میں سزا ہونے کی وجہ سے مسترد ہوئے تھے تاہم اب انہوں نے اب سزا ختم ہوچکی ہے۔

لاہور ہائی کورٹ کے پنڈی بنچ کے الیکشن ٹربیونل نے تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے خلاف اپیل خارج کردی اور ریٹرننگ آفیسر کے فیصلے کو برقرار رکھا۔

دوسری جانب لاہور ہائی کورٹ کے ایک اور الیکشن ٹربیونل کے رکن جسٹس خواجہ امتیاز احمد نے عمران خان اور سابق وزیر اعلیْ پنجاب شہباز شریف کے کاغذات نامزدگی پر سماعت کرنے سے معذرت کرلی۔

ٹربیونل کے رکن جسٹس خواجہ امتیاز احمد نے سفارش کی کہ ان اپیلوں کو سماعت کے لیے کسی دوسرے ٹربیونل کے روبرو پیش کیا جائے۔

جسٹس خواجہ امتیاز احمد نے عمران کے خلاف اپیل پر سماعت ذاتی وجوہات کی وجہ سے کرنے سے انکار کیا جبکہ شہباز شریف کے خلاف اپیل پر اس لیے معذوری ظاہر کی کہ انہوں نے ایک مقدمے میں شہباز شریف کے حق میں فیصلہ دیا تھا اس لیے اپیل سماعت کرنا ان کے مناسب نہیں ہے۔

ہائی کورٹ کے الیکشن ٹربیونل کے رکن جسٹس امتیاز نے گزشتہ نواز شریف کے خلاف اپیل پر بھی سماعت سے معذوری ظاہر کی تھی۔

اسی بارے میں