مبصرین کے فاٹا جانے کا فیصلہ اپنا ہوگا: دفترِ خارجہ

پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان نےکہا ہے کہ مئی میں ہونے والے عام انتخابات کے دوران بین الاقوامی مبصرین کا بلوچستان اور فاٹا میں جانے یا نہ جانے کا فیصلہ ان کا اپنا ہوگا۔

یہ بات دفترِ خارجہ کے ترجمان نے جمعرات کو اسلام اباد میں ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ایک سوال کے جواب میں کہی۔

جب انہیں بتایا گیا کہ یورپی یونین کے مبصرین کے گروپ کے سربراہ نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان نے انہیں بتایا ہے کہ بلوچستان اور فاٹا میں سیکورٹی کی صورت حال خراب ہے اس لیے وہ وہاں نہ جائیں تو اس پر انہوں نے کہا کہ اس بارے میں وزارتِ داخلہ سے رجوع کریں۔

انہوں نے کہا کہ یورپی یونین اور دولتِ مشترکہ سمیت دنیا کے گیارہ ممالک نے مئی کے عام انتخابات کا جائزہ لینے کی خواہش ظاہر کی ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ انتخابات کا جائزہ لینے کے لیے خواہش ظاہر کرنے والے اداروں اور ممالک میں نیشنل ڈیموکریٹک انسٹی ٹیوٹ، امریکہ، برطانیہ، آسٹریلیا، ملائیشیا، جاپان، ترکی، مالدیپ اور موریشس شامل ہیں۔

ادھر عالمی انتخابی مبصرین کے بلوچستان نہ جانے پر صوبے کے سابق وزیراعلیٰ سردار اختر مینگل نے مایوسی کا اظہار کیا ہے۔

نامہ نگار اعجاز مہر سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ بلوچستان میں حقیقی نمائندوں کو منتخب ہونے سے روکنے کا آغاز ہے۔

انہوں نے مزید کہا ’اگر دیکھا جائے تو دنیا کے کئی ایسے علاقے ہیں جہاں اس سے بھی بدترین حالات ہیں اور وہاں پر مبصرین گئے ہیں۔ہمیں افسوس تو ہوا ہے لیکن ہمیں یہ معلوم ہے کہ ان کی راہ میں رکاوٹ بنانے والی وہ قوتیں ہیں جن کی وجہ سے بلوچستان کے حالات اس حد تک پہنچ چکے ہیں اور وہ اس کو چھپانا چاہتے ہیں‘۔

جب ان سے پوچھا گیا کہ وہ کون سی قوتیں ہیں تو انہوں نے فوج، انٹیلیجنس اداروں اور فرنٹیئر کور کا نام لیا اور الزام عائد کیا کہ وہ بلوچستان کی صورت حال کے ذمہ دار ہیں۔

جب انہیں یاد دلایا گیا کہ آرمی چیف تو یہ واضح کر چکے ہیں کہ فوج انتخابی عمل میں مداخلت نہیں کرے گی اور وہ انتخاب ملتوی نہیں کرانا چاہتت تو اختر مینگل نے کہا کہ وہ بلوچ قوم پرستوں کی راہ میں رکاوٹ ڈال رہے ہیں اور لگتا ہے کہ 2008 سے بھی بدتر ’سلیکشن‘ کی تیاریاں کی جا رہی ہیں۔

انہوں نے عالمی انتخابی مبصرین سے اپیل کی کہ وہ بلوچستان ضرور آئیں اور نہ صرف انتخابات کی نگرانی کریں بلکہ صوبے بھر میں جو صورت حال ہے اس کا بھی جائزہ لیں اور دنیا کو اس کے بارے میں بتائیں۔

اسی بارے میں