’قبیلے، فرقے، لسانی بنیاد پر ووٹ مانگنے پر قید‘

Image caption ’امیدوار جمعرات تک اپنے پارٹی سرٹیفکیٹس جمع کرا دیں‘

پاکستان کے الیکشن کمیشن نے قبیلے، مذہب ، فرقے یا زبان کی بنیاد پر ووٹ مانگنے میں ملوث پائے جانے والے امیدواروں کے لیے تین سال کی سزا کا اعلان کیا ہے۔

الیکشن کمیشن نے یہ بھی کہا ہے کہ اگر کوئی امیدوار ووٹر کو رشوت دینے میں ملوث پایا گیا تو اسے بھی تین سال قید کی سزا دی جائے گی۔

ریڈیو پاکستان کے مطابق کمیشن نے پریزائیڈنگ افسران کو اختیار دیا ہے کہ وہ الیکشن کمیشن کے قوانین کی خلاف ورزی پر کسی کو بھی سزا دے سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ اس سے قبل اتوار کو الیکشن کمیشن نے مذہب کی بنیاد پر ووٹ مانگنے کو ممنوع قرار دیا تھا تاہم اس حوالے سے سزا تجویز نہیں کی گئی تھی۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ جمعرات تک اپنے پارٹی سرٹیفکیٹس جمع کرا دیں۔

کمیشن کے بقول ایسے امیدوار جو سرٹیفکیٹس جمع نہیں کرائیں گے انہیں آزاد امیدوار سمجھا جائے گا۔

دریں اثناء الیکشن ٹریبونلز کی طرف سے کاغذات نامزدگی کے منظور یا مسترد ہونے کے خلاف اپیلیں نمٹانے کا آج آخری دن ہے۔

امیدوار جمعرات تک کاغذات نامزدگی واپس لے سکتے ہیں اور ان کی حتمی فہرست جمعہ کو شائع کر دی جائے گی۔

اسی بارے میں