وانا میں انتخابی جلسے پر راکٹ حملہ،1 ہلاک

Image caption ’دو راکٹ جلسے کے قریب جبکہ ایک راکٹ وانا بازار میں گرا ہے‘

پاکستان کے شورش زدہ قبائلی علاقے جنوبی وزیرستان کے صدر مقام وانا میں ایک آزاد اُمیدوار کے انتخابی جلسے پر راکٹ حملے میں ایک شخص ہلاک جبکہ نو زخمی ہوئے ہیں۔

وانا میں مقامی پولیٹکل انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ جمعہ کو شہر کے جنوبی حصے میں آزاد اُمیدوار نصیراللہ خان کے انتخابی جلسے پر نامعلوم افراد نے اس وقت تین راکٹ فائر کیے گئے جب انتخابی جلسے میں ہزاروں لوگ موجود تھے۔

انہوں نے کہا کہ دو راکٹ جلسے کے قریب جبکہ ایک راکٹ وانا بازار میں گرا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ راکٹ حملے میں محمد نور نامی ایک شخص ہلاک جبکہ نو افراد زخمی ہوئے ہیں۔زخمیوں کو فوری طور وانا ضلعی ہسپتال منتقل کردیاگیا ہے۔

مقامی اہلکار کے مطابق تینوں راکٹ وانا بازار کے شمالی حصے میں واقع وچہ خوڑہ کے علاقے سے فائر کئے گئے ہیں۔

انہوں کہا کہ وچہ خوڑہ سے تحصیل تیارزہ کے محسود قبائل کی سرحد لگتی ہے۔

اس واقعہ کی ابھی تک کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے االبتہ اس واقعہ سے چند دن پہلے مُلا نذیر گروپ کے مقامی طالبان نے تمام اُمیدواروں کو بتایا تھا کہ وانا بازار میں جلسے اور جلوسوں سے پرہیز کریں کیونکہ طالبان شدت پسندوں میں کئی ایسے گروپ موجود ہیں جو انتحابی اُمیدواروں کو نشانہ بناسکتے ہیں۔

یاد رہے کہ وانا میں کچھ عرصے سے امن قائم ہے جس کی وجہ سے سیاسی اُمیدوار یہاں کُھلے عام انتخابی مُہم چلا رہے تھے۔

اسی بارے میں