ایم کیو ایم کی نئی رابطہ کمیٹی کا اعلان

Image caption تئیس رکنی رابطہ کمیٹی کے ارکان کے ناموں کا اعلان الطاف حسین نے جنرل ورکرز کمیٹی میں کیا

متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے اپنی جماعت کی نئی رابطہ کمیٹی کے لیے ناموں کا اعلان کر دیا ہے۔

ڈاکٹر نصرت شوکت، انجینئر ناصر جمال اور ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نئی رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینرز ہوں گے۔

عادل خان، خالد سلطان، عامر خان، اسلم آفریدی، میاں عتیق، یوسف شاہوانی، ناصر پنہور، حیدر عباس رضوی، نسرین جلیل، ڈاکٹر صغیر احمد، واسع جلیل، کنور نوید جمیل اور ممتاز انور نئی کمیٹی میں شامل کیے گئے ہیں۔

تئیس رکنی رابطہ کمیٹی کے ارکان کے ناموں کا اعلان الطاف حسین نے جنرل ورکرز کمیٹی میں کیا۔

الطاف حسین نے اس بات کا بھی اعلان کیا ندیم نصرت جو لندن میں مقیم ہیں وہ لندن سے رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینر ہوں گے جبکہ مصطفیٰ عزیز آبادی، طارق میر، محمد آشفاق، محمد انوراور قاسم علی رضا لندن رابطہ کمیٹی کے رکن ہوں گے۔

ایم کیوایم کی کراچی تنظیمی کمیٹی کے نئے انچارج ندیم احسان بنائے گئے ہیں جبکہ جوائنٹ انچارج ارشاد کمالی ہوں گے۔

اس سے قبل متحدہ قومی موومنٹ کی عبوری رابطہ کمیٹی نے اعلان کیا تھا کہ تحلیل شدہ رابطہ کمیٹی کے اراکین سلیم شہزاد، رضاہارون اور آصف صدیقی کو نئی رابطہ کمیٹی میں شامل نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

عبوری رابطہ کمیٹی کے مطابق سلیم شہزاد، رضاہارون اور آصف صدیقی کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ آئندہ پارٹی کارکن کی حیثیت سے اپنے اپنے علاقوں میں کام کریں۔

عبوری رابطہ کمیٹی نے مزید کہا تھا کہ تنظیمی نظم وضبط کی مسلسل خلاف ورزیوں کے پیش نظرسابقہ رابطہ کمیٹی کے رکن انیس احمد ایڈوکیٹ کو تمام تر تنظیمی ذمہ داریوں سے سبکدوش کردیا گیا ہے۔

اعلان کے مطابق انیس احمد ایڈوکیٹ کو تاہدایت ثانی گھر بیٹھنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ تمام تنظیمی عہدیداروں اور کارکنوں کو ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ انیس احمد ایڈوکیٹ سے کسی بھی قسم کا رابطہ نہ رکھیں۔

اس سے قبل عبوری رابطہ کمیٹی نے سابق رکن قومی اسمبلی شمیم صدیقی اور ایم کیو ایم برطانیہ کے کارکن محمد احسن عرف چنوں کی بنیادی رکنیت فوری طور پر معطل کردی ہے۔

بیان میں کہا گیا تھا کہ ان اطلاعات کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ان افراد کی رکنیت بحال کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ حتمی تحقیقاتی رپورٹس کی روشنی میں کیا جائے گا۔

عبوری رابطہ کمیٹی نے واضح کیا کہ شمیم صدیقی اور محمد احسن کے کاروباری یا لین دین کے معاملات سے ایم کیوایم کا کوئی تعلق نہیں ہے اور نہ ہی ایم کیوایم ان معاملات کی ذمہ دار ہوگی۔

ایم کیوایم کے قائد الطاف حسین نے ایک بیان میں کہا تھا کہ جماعت میں تطہیر اور تنظیم نو کا عمل معمول کا حصہ ہے۔

اسی بارے میں