فیس بک کی مدد سے اغوا ہونے والا لڑکا بازیاب

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں پولیس نے فیس بک کی مدد سے اغوا کیے جانے والے ایک تیرہ سالہ لڑکے کو بازیاب کرا لیا ہے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ایک جرائم پیشہ گروہ نے ایک ماہ پہلے اس لڑکے سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک پر آن لائن گیمنگ دوست بن کر رابط کیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ اس کے بعد لڑکے کو ایک ہفتہ قبل گھر سے باہر ملاقات کا جھانسا دے کر بلایا گیا اور اغوا کر لیا گیا۔

اغواء کاروں نے رہائی کے بدلے پانچ لاکھ ڈالر یا پانچ کروڑ پاکستانی روپے کا مطالبہ کیا تھا۔

پاکستان میں جرائم پیشہ افراد اور شدت پسند اکثر اوقات اغواء کے واقعات میں ملوث ہوتے ہیں تاہم سماجی رابطوں کی ویب سائٹس کے ذریعے بچوں کو اغواء کے لیے جھانسا دینا ایک غیر معمولی واقعہ ہے۔

اطلاعات کے مطابق بازیاب ہونے والا تیرہ سالہ لڑکا ایک اعلیٰ کسٹم آفیسر کا بیٹا ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق حکام موبائل فونز کے ریکارڈ کے ذریعے اغواء کاروں تک پہنچے۔

ایک اہلکار کے مطابق لڑکے کی بازیابی کے لیے کیے گئے آپریشن میں چار اغواء کار مارے گئے۔

بچے کی ماں نے دوسرے بچوں کے والدین سے درخواست کی ہے کہ فیس بک کے استعمال کے دوران اپنے بچوں پر نظر رکھیں۔

اسی بارے میں