مسلم لیگ ن کے ایاز صادق سپیکر قومی اسمبلی منتخب

Image caption مسلم لیگ ن کے رہنما سردار ایاز صادق نے الیکشن میں عمران خان کو شکست دی تھی

پاکستان میں عام انتخابات کے بعد حکومت سازی کا عمل جاری ہے اور پیر کو قومی اسمبلی اور پنجاب اسمبلی کے سپیکر منتخب ہو گئے ہیں۔

پیر کو قومی اسمبلی کے اجلاس میں نئے سپیکر کے انتخاب کے لیے خفیہ رائے شماری ہوئی۔

رائے شماری کے نتائج کے مطابق پاکستان مسلم نون کے ایاز صادق 258 ووٹ لے کر قومی اسمبلی کے 19 ویں سپیکر منتخب ہو گئے ہیں۔

انہوں نےسبکدوش ہونے والی سپیکر ڈاکٹر فہمیدہ مرزا سے حلف لیا۔

ایاز صادق کے مقابلے میں پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار شہر یار آفریدی نے 31 جبکہ ایم کیو ایم کے امید وار اقبال قادری نے 23 ووٹ حاصل کیے۔

اس کے بعد قومی اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر کا انتخاب بھی خفیہ رائے شماری سے ہوا اور اس میں مسلم لیگ نون کے ہی مرتضیٰ جاوید عباسی 258 ووٹ لے ڈپٹی سپیکر منتخب ہو گئے اور انہوں نے نومنتخب سپیکر سے حلف لیا۔

ایم کیو ایم کی امیدوار کشور زہرہ کو 23 اور تحریک انصاف کی منزہ فاطمہ کو 31 وٹ ملے۔

اس سے پہلے پی پی پی کے رہنما مخدوم امین فہیم نے قومی اسمبلی میں اعلان کیا کہ ان کی جماعت قومی اسمبلی کے سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کے عہدوں کو غیر جانبدار بنانے کے لیے پی پی پی اس کے انتخاب میں حصہ لینے سے دستبردار ہو گئی ہے۔

پاکستان کی چودہویں قومی اسمبلی کے سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کے عہدوں کے لیے تین جماعتوں کے امیدوار مدِمقابل تھے۔

نومنتخب سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق پنجاب کے دارالحکومت لاہور کے حلقہ این اے 122 سے انتخاب جیتے تھے جبکہ ڈپٹی سپیکرکے لیے ایبٹ آباد سے منتخب ہونے والے مرتضیٰ جاوید عباسی امیدوار ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف نے سپیکرکے عہدے کے لیے خیبرپختونخوا کے ضلع کوہاٹ سے منتخب شہریار آفریدی اور ڈپٹی سپیکر کے لیے جماعت کے خواتین ونگ کی صدر منزہ فاطمہ کو میدان میں اُتارا تھا۔

متحدہ قومی موومنٹ نے سپیکر کے عہدے کے لیے کراچی سے منتخب رکنِ قومی اسمبلی ایس اقبال قادری اور ڈپٹی سپیکر کے لیے پارٹی کے خواتین ونگ کی سربراہ کشور زہرہ کونامزد کیا تھا۔

پیپلز پارٹی نے سپیکرکے عہدے کے لیے عمرکوٹ سندھ سے منتخب نواب محمد یوسف تالپور اور ڈپٹی سپیکر کے لیے پنجاب کے شہر رحیم یار خان سے منتخب غلام رسول کوریجہ کو نامزد کیا تھا لیکن پی پی پی اس انتخاب سے دستبردار ہوگئی۔

پنجاب اسمبلی کے سپیکر منتخب

مسلم لیگ نون کے رانا محمد اقبال دوسری مرتبہ پنجاب اسمبلی کے سپیکر منتخب ہو گئے ہیں۔

پاکستان کے سرکاری ٹی وی کے مطابق پنجاب اسمبلی میں اکثریتی جماعت مسلم لیگ نواز کے امیدوار رانا محمد اقبال کو 297 ووٹ ملے جبکہ ان کے مخالف امیدوار راجہ راشد حفیظ کو 35 ووٹ ملے ہیں۔

رانا محمد اقبال نے پنجاب اسمبلی کے سپیکر کی حیثیت سے حلف اٹھا لیا ہے۔ مسلم لیگ نون کے ہی شیر محمد گورچانی ڈپٹی سپیکر منتخب ہو گئے ہیں اور انہوں نے نومنتخب سپیکر سے حلف لیا۔

پنجاب اسمبلی کا اجلاس چھ جون تک ملتوی کر دیا گیا ہے اور اسی روز نئے وزیراعلیٰ کا انتخاب کیا جائے گا۔

پنجاب اسمبلی میں حزبِ اختلاف کی جماعت تحریک انصاف کی طرف سے سپیکر کے عہدے کے لیے راجہ راشد حفیظ نے امیدوار تھے۔ڈپٹی سپیکر کے لیے تحریک انصاف کی جگہ مسلم لیگ قاف نے اپنا امیدوار کھڑا کیا۔

مسلم لیگ قاف نے اس عہدے کے لیے سردار وقاص موکل کو نامزد کیا جو پنجاب کے علاقے قصور سے پہلی بار رکنِ صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے ہیں۔

پنجاب کے نئے وزیر اعلیٰ کے لیے کاغذات نامزدگی پانچ جون کو جمع کرائے جاسکیں گے۔

مسلم نواز کی پارلیمانی پارٹی نے میاں شہباز شریف کو متفقہ طور پر پنجاب کے وزاتِ اعلیٰ کے عہدے کے لیے نامزد کر دیا ہے۔

اسی بارے میں