نیٹو کنٹینر پر حملے میں چار افراد ہلاک

Image caption نیٹو کنٹینر جمرود سے گزر کر افغانستان جاتے ہیں

خیبر ایجنسی میں تحصیل جمرود کے علاقے شاکئی میں نامعلوم حملہ آوروں نے ایک نیٹو کنٹینر پر حملہ کیا جس میں کم از کم چار افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

اسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ جہانگیر وزیر نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ خاصہ داوروں کی وردیاں پہنے ہوئے 15 کے قریب عسکریت پسندوں نے نیٹو کنٹینر پر دھاوا بول دیا۔

انھوں نے کنٹینر پر گولیاں برسائیں اور تین راکٹ بھی داغے۔ جب گاڑی رک گئی تو عسکریت پسندوں نے اس کو نذرِ آتش کر دیا۔

جہانگیر وزیر کے مطابق اس حملے میں چار افراد ہلاک ہوئے ہیں جن میں سے کنٹینر کے اندر موجود تین آگ سے جل کر مارے گئے جب کہ چوتھے کو حملہ آوررں نے ہلاک کر دیا۔

اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ نے بتایا کہ یہ کنٹینر نیٹو سپلائی کے تحت افغانستان سامان لے کر جا رہا تھا اور اس میں ایمبولنسیں اور دوسری گاڑیوں سوار تھیں۔

گذشتہ چند ماہ میں خیبر ایجنسی اور پشاور کی حدود میں افغانستان میں سرگرمِ جنگ نیٹو افواج کے لیے سازو سامان لے جانے والی گاڑیوں پر حملوں میں تیزی آئی ہے، اور اس دوران کئی نیٹو گاڑیوں کو نشانہ بنایا چکا ہے۔

تجزیہ کاروں کے مطابق ایسے واقعات روکنا آسان نہیں ہے کیونکہ یہ گوریلا کارروائیاں ہیں جن سے پاکستان اور افغانستان پہلے ہی بری طرح متاثر ہیں۔

2014 کے آخر تک نیٹو افواج کی اکثریت کا افغانستان سے انخلا ہو جائے گا اور اس دوران وہاں موجود ساز و سامان کی بڑی تعداد کو کنٹینروں کے ذریعے پاکستان کے راستے واپس لے جایا جائے گا۔ خدشہ ہے کہ اس دوران ان کنٹینروں پر حملوں میں اضافہ ہو جائے گا۔

اسی بارے میں