’ مذاکرات کا دروازہ ہر وقت کھلا رکھنا چاہیے‘

Image caption دہشت گردی کا خاتمہ ان کی حکومت کی اولین ترجیح ہے: وزیراعظم

پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف نے مذاکرات کی افادیت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ مذاکرات کا دروازہ ہر وقت کھلا رہنا چاہیے۔

یہ بات انھوں نے بدھ کو وفاق کے زیرِ انتظام قبائلی علاقوں سے تعلق رکھنے والے اراکینِ پارلیمان سے اسلام آباد میں ہونے والی ملاقات میں کہی۔

ملاقات کے بعد جاری ہونے والے سرکاری بیان کے مطابق وزیراعظم نے کہا کہ کسی بھی ملک کی معاشی ترقی کے لیے امن و امان اور سکیورٹی کی صحیح صورتِ حال نہایت اہمیت کی حامل ہوتی ہے تاہم حالیہ برسوں میں پاکستان دہشت گردی کے ہاتھوں سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے۔

وزیراعظم نواز شریف نے کہا’دہشت گردی ایک سنگین چیلنج ہے اور اس سے نمٹنے کے لیے اجتماعی کوشش کرنا ہو گی‘۔

’معیشت کی بحالی اور لوگوں کا معیار زندگی بہتر بنانے کے لیے سازگار اور پرامن ماحول ضروری ہے‘۔

انھوں نے کہا کہ دہشت گردی اور لاقانونیت کی وجہ سے قبائلی علاقے کی معیشت زبوں حالی کا شکار ہے۔

نواز شریف نے کہا کہ وہ قبائلی علاقوں میں امن قائم کرنا چاہتے ہیں۔

وزیراعظم نے اجلاس کو بتایا کہ وہ افغان صدر حامد کرزئی سے مسلسل رابطے میں ہیں۔

اجلاس میں قومی سلامتی سے متعلق معاملات خصوصاً دہشت گردی کے حوالے سے غور کیا گیا۔

قبائلی علاقوں سے منتخب اراکینِ قومی اسمبلی نے حکومت کو تجویز دی کہ فاٹا میں قیامِ امن کی کوششوں میں کامیابی کے لیے، فوجی افسران کی مداخلت کو کم کیا جائے۔

وزیراعظم کی فاٹا سے تعلق رکھنے والے اراکین اسمبلی سے ملاقات حکومت کی طرف سے انسدادِ دہشت گردی کے لیے جامع حکمتِ عملی تیار کرنے کے مشاورتی سلسلے کی کڑی تھی۔

اسی بارے میں