’قانون نافذ کرنے والے ادارے کارکردگی دکھائیں‘

Image caption دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہمیں ہر حال میں کامیابی چاہیے: نواز شریف

پاکستان کے وزیراعظم میاں نواز شریف نے ملک میں قانون نافذ کرنے والے اداروں سے عوام اور حکومت کی توقعات پر پورا اترنے کے لیے کارکردگی میں بہتری لانے کو کہا ہے۔

انہوں نے یہ ہدایات جمعہ کو اسلام آباد میں وزارتِ داخلہ کے دورے کے دوران کہی جہاں سیکرٹری داخلہ نے وزیراعظم کو ملک میں امن و امان اور سکیورٹی کی صورتحال اورخفیہ معلومات کے تبادلے کے نظام کےبارے میں بریفنگ دی۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق اس موقع پر نواز شریف کا کہنا تھا کہ دہشتگردی کی کارروائیوں کو روکنے کے لیے ملک کی سکیورٹی ایجنسیاں قابلِ عمل اور ٹھوس معلومات فراہم کریں۔

انہوں نے وزارت داخلہ کو مطلوبہ اہداف کے حصول کے لیے سوچ سمجھ کر ایک قابلِ عمل منصوبہ تیار کرنے کو کہا اور ان کا کہنا تھا کہ ’امن کی بحالی اور دہشتگردی کا خاتمہ ہماری پہلی ترجیح ہونی چاہیے‘۔

نواز شریف نے یہ بھی کہا کہ ’دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہمیں ہر حال میں کامیابی چاہیے اور اس سلسلے میں ناکامی کی گنجائش نہیں‘ اور ملکی مفادات کے تحفظ کے لیے تمام سکیورٹی ایجنسیوں کو آپس میں تعاون کرنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ کارکردگی میں بہتری لانے کے لیے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ضروری فنڈ فراہم کیے جائیں گے لیکن انہیں بھی عوام اور حکومت کی توقعات پر پورا اترنے کے لیے کارکردگی دکھانا ہوگی۔

وزیراعظم نے فاٹا اور ملک کے دیگر علاقوں میں لوگوں کی غیر قانونی طور پر آمد اور قیام کا سلسلہ روکنے کے لیے کوششوں پر زور دیا اور کہا کہ وزارت داخلہ صوبائی حکومتوں کو ریاست کے مخالف اور دہشت گرد عناصر سے نمٹنے کے لیے تمام صوبوں کو مدد فراہم کرے۔

نواز شریف نے توانائی کے منصوبوں پر کام کرنے والے چینی انجنیئرز اور چینی باشندوں کی سکیورٹی کو یقینی بنانے کی بھی ہدایت کی جس پر وزارت داخلہ کے حکام نے وزیر اعظم کو بتایا کہ چینی انجنیئرز کی سیکیورٹی کے لیے پانچ ہزار سے زائد سکیورٹی اہلکار مامور ہیں۔

اسی بارے میں