درہ آدم خیل: شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر بمباری

Image caption جن علاقوں میں جنگی جہازوں سے بمباری کی گئی ہے وہاں سے شدت پسند پشاور کے مضافاتی علاقوں میں کارروائیاں کرتے ہیں

پاکستان کے نیم قبائلی علاقے درہ آدم خیل میں شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر سکیورٹی فورسز کے جیٹ طیاروں نے بمباری کی ہے جس میں اطلاعات کے مطابق سات شدت پسند ہلاک ہو گئے۔

کارروائی اتوار کی صبح درہ آدم خیل اور خیبر ایجنسی کے علاقے باڑہ کے سرحدی علاقوں میں کی گئی ہے۔

سکیورٹی فورسز کے ذرائع نے بی بی سی کو بتایا کہ جیٹ طیاروں نے زاؤاڈھ، خرمتنگ، منصور سنگر، اوعر خاونگئی میں شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی ہے جس میں ماضی میں شدت پسندوں کی تربیت کے لیے استعمال ہونے والے مرکز سمیت چھ ٹھکانے تباہ ہو گئے۔

بمباری میں کم سے کم سات شدت پسند ہلاک ہوئے ہیں جبکہ بعض مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد اس سے زیادہ ہے جس کی سرکاری سطح پر تصدیق نہیں ہو سکی۔

باڑہ اور درہ آدم خیل کے علاقوں سے ایسی اطلاعات ہیں کہ یہاں شدت پسندوں کی سرگرمیاں جاری ہیں اور یہاں سے پشاور کے مضافاتی علاقوں میں حملے کیے جاتے ہیں۔

گزشتہ چند روز سے پشاور کے مضافاتی ایف آر پشاور میں بھیں سرچ آپریشن کیا گیا ہے جہاں شدت پسندوں کے مراکز تباہ کیے گئے ہیں۔

درہ آدم خیل میں ماضی میں شدت پسندی کے متعدد واقعات پیش آ چکے ہیں۔

اسی بارے میں