خیبرپختون خوا میں شدید بارشوں سے تین افراد ہلاک

Image caption ملک بھر میں طوفانی بارشوں کی وجہ سے شدید نقصان پہنچا ہے

خیبر پختونخوا کے مختلف اضلاع میں بارشوں اور سیلاب سے تین افراد ہلاک اور تین پل پانی میں بہہ گئے ہیں۔ بنوں میں دریائے ٹوچی اور لکی مروت میں دریائے گمبیلا میں سیلابی ریلوں سے قریب آبادی متاثر ہوئی ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق سب سے زیادہ بارش سیدو شریف میں ریکارڈ کی گئی ہے۔

پشاور میں قدرتی آفات سے نمٹنے کے ادارے پی ڈی ایم اے کے ترجمان لطیف الرحمان نے بتایا ہے کہ ضلع کرک میں سر ڈاگ کے مقام پر تیز بارشوں سے ایک مکان کی چھت گر گئی جس سے دو افراد ہلاک ہو گئے۔ اس کے علاوہ ضلع لکی مروت میں دریائے گمبیلا سے ایک نوجوان کی لاش ملی ہے جس کی ابھی تک شناخت نہیں ہو سکی ہے۔

ادھر ضلع بنوں میں شدید بارشوں اور سیلابی ریلوں سے دو پلوں کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ پی ڈی ایم اے کے ترجمان کے مطابق نیو کرم پل پانی میں مکمل طور پر بہہ گیا ہے۔ یہ پل بنوں شہر میں واقع ہے اور اس سے بنوں کے مضافات کو راستہ جاتا ہے۔ پل کے گرنے سے ٹریفک کو متبادل راستوں کی جانب موڑ دیا گیا ہے۔ بنوں میران شاہ روڈ پر بھی دو پلوں کو نقصان پہنچا ہے۔ بنوں میں دریائے ٹوچی میں طغیانی سے قریب آباد لوگ بھی بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔

محکمہ موسمیات کے حکام نے بتایا ہے کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ بارش سوات میں سیدو شریف کے مقام پر 136 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی ہے۔ پاڑہ چنار میں 86 ملی میٹر جبکہ مالم جبہ میں 61 ملی میٹر بارش ہوئی ہے۔

سوات اور اس کے قریبی علاقوں میں ندی نالوں کے قریب آباد لوگوں کو محتاط رہنے کی وارننگ جاری کی گئی ہے اسی طرح پشاور نوشہرہ چارشدہ اور مردان میں بھی الرٹ وارننگ دی گئی تھی۔

اسی بارے میں