پشاور:پولیس ناکے پر فائرنگ، چار اہلکار ہلاک

Image caption پشاور میں حال ہی میں ناکوں کی تعداد میں اضافہ کیا گیا ہے

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں فائرنگ کے ایک واقعے میں چار پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

مقامی پولیس کے مطابق یہ واقعہ اتوار کی شام پہاڑی پورہ کے علاقے میں دلہ زاک روڈ پر پیش آیا۔

پشاور پولیس کے اہلکار کے مطابق موٹرسائیکل پر سوار نامعلوم مسلح افراد نے ناکے پر تعینات اہلکاروں پر فائرنگ کی جس سے چار افراد مارے گئے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہلاک ہونے والوں میں دو اے ایس آئی اور دو کانسٹیبل رینک کے اہلکار شامل ہیں۔

نامہ نگار عزیز اللہ خان کے مطابق ہلاک ہونے والے پولیس اہلکاروں کے لواحقین نے ان کی لاشیں جی ٹی روڈ پر رکھ کر احتجاج کیا ہے۔ ان افراد نے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی اور کہا کہ وہ جان و مال کے تحفظ میں ناکام رہی ہے۔

پشاور میں ماضی میں بھی پولیس اور دیگر سکیورٹی اداروں کے اہلکاروں کو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے اور ان حملوں میں اب تک درجنوں افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

خیال رہے کہ پشاور گزشتہ چند ہفتوں میں متعدد بار دہشتگردی کا نشانہ بنا ہے جس کے بعد شہر میں پولیس کے ناکوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔

ان واقعات کے بعد صوبائی حکومت نے انسداد دہشت گردی کی نئی فورس قائم کرنے کے منصوبے پر کام شروع کر دیا ہے۔

حکام کے مطابق ابتدائی طور پر پولیس کی ایلیٹ فورس کے ایک ہزار اہلکاروں کو تربیت دے کر فورس قائم کی جائے گی جس کے بعد مزید بھرتیوں کے لیے کوششیں کی جائیں گی ۔

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کے ترجمان شیراز پراچہ نے بی بی سی کو بتایا کہ دو روز پہلے کابینہ کے اجلاس میں اس فورس کے قیام کی منظوری دے دی گئی ہے جس کے فورا بعد اس کے قیام کے لیے کوششیں تیز کر دی گئی ہیں۔

اسی بارے میں