نیٹو سپلائی کے خلاف تحریکِ انصاف کا دھرنا ملتوی

Image caption پاکستان تحریکِ انصاف نے ڈرون حملوں کے خلاف نیٹو سپلائی روکنے کے لیے احتجاجی دھرنے کا اعلان کیا تھا

پاکستان تحریکِ انصاف نے نیٹو سپلائی روکنے کے لیے 20 نومبر کو اعلان کردہ دھرنا تین دن کے لیے ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

جماعت کے مرکزی میڈیا سیل سے اتوار کو جاری ہونے والے ایک مختصر بیان میں کیا گیا ہے کہ تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے پشاور میں نیٹو سپلائی روکنے اور ڈرون حملوں کے حوالے سے 20 نومبر کا اعلان کردہ دھرنا تین دن کےلیے ملتوی کردیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ فیصلہ ملک میں جاری کشیدہ صورتِ حال کے باعث کیا گیا ہے۔ بیان میں یہ وضاحت بھی کی گئی ہے کہ دھرنا منسوخ نہیں بلکہ صرف موخر کیا گیا ہے۔

اس سے پہلے تحریک انصاف سمیت خیبر پختونخوا کی مخلوط حکومت میں شامل اتحادی جماعتوں جماعت اسلامی اور عوامی جمہوری اتحاد کا مشترکہ اجلاس پشاور میں منعقد ہوا تھا۔

اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ دھرنے کی نئی تاریخ کا اعلان آئندہ چوبیس گھنٹوں میں کر دیا جائے گا۔ اجلاس میں اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ آئندہ احتجاجی دھرنے کو کامیاب بنانے کےلیے تمام سیاسی جماعتوں سے رابطہ کیا جائے گا۔

Image caption اس دھرنے میں تحریکِ انصاف کے حکومتی وزرا یا اہلکار شرکت نہیں کریں گے بلکہ یہ احتجاج پارٹی کی سطح پر ہوگا۔

خیال رہے کہ تحریک انصاف نے بیس نومبر کو پشاور میں نیٹو سپلائی اور قبائلی علاقوں میں جاری ڈرون حملوں کو روکنے کےلیے احتجاجی دھرنا دینے کا اعلان کیا تھا۔

یہ اعلان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے تحریک طالبان پاکستان کے امیر حکیم اللہ محسود کی امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت کے ردعمل میں کیا تھا۔

پی ٹی آئی کے رہنما اس بات کو واضح کرچکے ہیں کہ اس دھرنے میں ان کے حکومتی وزرا یا اہلکار شرکت نہیں کریں گے بلکہ یہ احتجاج پارٹی کی سطح پر ہوگا۔

اس سے پہلے پشاور میں جماعت اسلامی کی طرف سے بھی نیٹو سپلائی روکنے کےلیے ایک دن کےلیے دھرنا دیا گیا تھا جس سے جماعت کے مرکزی رہنماؤں نے خطاب کیا تھا۔

اس احتجاجی دھرنے کی وجہ سے کراچی سے لے کر پشاور تک افغانستان میں تعینات اتحادی افواج کو ہر قسم کی سپلائی معطل رہی تھی۔

اسی بارے میں