’قوم فوج کی قربانیوں کی معترف ہے‘

Image caption جنرل اشفاق پرویز کیانی نے جمعہ کو پاکستان کے قبائلی علاقوں اور خیبر پختونخوا میں فوج اور فرنٹیئر کور کے دستوں کا معائنہ کیا

پاکستان فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے قبائلی علاقوں اور خیبر پختونخوا میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شامل فوج اور فرنٹیئر کور کے افسران اور جوانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’دہشت گردی اور عسکریت پسندی‘ کو ختم کرنے میں پوری قوم ان کی قربانیوں کی معترف ہے۔‘

جنرل اشفاق پرویز کیانی نے جو اس ماہ کی اٹھائیس تاریخ کو اپنے عہدے سے ریٹائر ہو رہے ہیں جمعہ کو پاکستان کے قبائلی علاقوں اور خیبر پختونخوا میں فوج اور فرنٹیئر کور کے دستوں کا معائنہ کیا ہے۔

پاکستان فوج کے سربراہ کی طرف سے ’دہشت گردی اور عسکریت پسندی‘ کے لفظوں کا استعمال پاکستان میں دائیں بازو کی جماعتوں اور حکمران جماعت کی طرف سے اس بارے میں دیئے جانے والے بیانات کے برعکس ہے۔

گزشتہ ماہ حکومت کی طرف سے بلائی جانے والی کل جماعتی کانفرنس کے بعد منظور کیے جانے والے اعلامیہ میں بھی ان لفظوں کے استعمال سے اجتناب کیاگیا تھا۔

یاد رہے کہ جماعت اسلامی کے سربراہ سید منور حسن نے تو ایک انٹرویو میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہلاک ہونے والے پاکستان فوج کے افسروں اور جوانوں کو شہید قرار دینے پر بھی اعتراض کر دیا تھا جس کے بعد ملک بھر سے شدید رد عمل سامنے آیا تھا۔

حتیٰ کہ فوج کے دفتر تعلقات عامہ نے بھی اپنی روایات کے برعکس ملک کے ایک سیاسی رہنما کی طرف سے بیان کی شدید الفاظ میں مذمت کی تھی۔

جنرل اشفاق پرویز کیانی نے جنوبی وزیرستان کے صدر مقام وانا، شمالی وزیر ستان کے صدر مقام میران شاہ اور جنڈولہ میں فوجی دستوں سے ملاقات میں ان کے حوصلوں کی داد دی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل کیانی نے قبائلی علاقوں اور فاٹا میں فوج کی طرف سے جاری کردہ ترقیاتی کاموں کا بھی جائزہ لیا۔ ان ترقیاتی منصوبوں میں سات سو چودہ کلو میٹر تجارتی راہ داری پر کام کی پیش رفت کا بھی جائزہ لیا۔

انھوں نے تعمیراتی کام کے معیار پر بھی فوج اور فرنٹیئر ورکس آرگنائزیش کی تعریف کی۔

اس کے بعد فوج کے سربراہ نے پشاور کے کور ہیڈ کواٹر کا بھی دورہ کیا اور یادگار شہدا پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ پڑھی۔

انھوں نے پشاور گیریژن کے افسران اور فوجیوں سے خطاب میں ان کے پیشہ وارانہ معیار اور عزم اور حوصلے کی تعریف کی۔

اس سے قبل جنرل کیانی نے ڈیرہ اسماعیل خان کا دورہ بھی کیا۔ کور کمانڈر پشاور لیفٹینٹ جنرل خالد ربانی بھی ان تمام علاقوں کے دورہ کے دوران جنرل کیانی کے ہمراہ تھے۔

اسی بارے میں