بلوچستان:ڈھائی ماہ قبل اغوا ہونے والے ڈاکٹر مناف رہا

Image caption ڈاکٹر مناف ترین کو رواں برس 17 ستمبر کو کوئٹہ سے اغوا کیا گیا تھا

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ سے ڈھائی ماہ قبل اغوا ہونے والے ماہر امراض قلب ڈاکٹر مناف ترین کو اغوا کاروں نے رہا کر دیا ہے۔

کوئٹہ سے نامہ نگار محمد کاظم کے مطابق اغوا کار ڈاکٹر مناف ترین کو سنیچر کی شب ساڑھے تین بجے کراچی سے متصل بلوچستان کے ضلح لسبیلہ کے قریب اوتھل میں ایک ہوٹل کے قریب چھوڑ گئے۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر لسبیلہ احمد نواز چیمہ نے ڈاکٹر مناف ترین کی بازیابی کی تصدیق کرتے ہوئے بی بی سی کو بتایا کہ انھیں کراچی روانہ کر دیا گیا۔

ڈاکٹر مناف ترین کو رواں برس 17 ستمبر کو کوئٹہ سے اغوا کیا گیا تھا۔

ان کے اغوا کے خلاف بلوچستان کے ڈاکٹرز ہڑتال پر تھے اور سرکاری ہسپتالوں کے او پی ڈیز میں کام بند ہونے کی وجہ سے مریضوں کو شدید پریشانی اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔

ادھر پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن بلوچستان کے صدر ڈاکٹر سلطان ترین نے اتوار کو کوئٹہ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈاکٹر مناف کی رہائی میں حکومت اور پولیس کا کوئی کردار نہیں ہے۔

انھوں نے بتایا کہ بلوچستان میں ڈاکٹر شدید عدم تحفظ کا شکار ہیں اور پولیس اور انتظامیہ ان کو تحفظ دینے میں ناکام ہوگئی ہے۔

ان کے بقول پی ایم اے بلوچستان کی جنرل باڈی کا اجلاس پیر کو طلب کیا گیا ہے جس میں ڈاکٹروں کا احتجاج ختم کرنے یا نہ کرنے کے بارے میں فیصلہ کیا جائے گا۔

بلوچستان میں گزشتہ چند سالوں سے اغواء برائے تاوان کے واقعات کا سلسلہ جاری ہے اور صوبے کے سابق صوبائی وزیرِ داخلہ میر ظفر اللہ زہری گزشتہ برس نے ایک انٹرویو کے دوران الزام عائد کیا تھا اغواء برائے تاوان میں بعض وزراء بھی ملوث ہیں۔

اغواء برائے تاوان کی بڑھتی ہوئی وارداتوں پر سپریم کورٹ آف پاکستان نے بھی شدید تشویش کا اظہار کیا تھا اور صوبائی حکومت کو کئی بار ہدایت کی تھی کہ وہ اس میں ملوث گروہوں کے خلاف کارروائی کرے۔

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن ( بلوچستان ) کے اعدادوشمار کے مطابق بلوچستان میں گزشتہ چند سال کے دوران اٹھائیس ڈاکٹروں کو قتل کیا گیا ہے جبکہ سولہ ڈاکٹروں کو تاوان کے لیے اغوا کیا گیا۔

خیال رہے کہ بلوچستان میں سنہ 2009 سے جہاں ڈاکٹروں کی ایک بڑی تعداد کو تاوان کی غرض سے اغوا کیا گیا ہے وہاں دو ڈاکٹر دین محمد بلوچ اور اکبر مریگزشتہ کئی سال سے لاپتہ بھی ہیں۔

اسی بارے میں