دس وہ خبریں جو شاید آپ نہ پڑھ سکے

کافی
Image caption فرانس میں چائے برطانیہ میں کافی سے بھی زيادہ مقبول ہے

1: آسٹریلیا کی ہوائی کمپنی کونٹس کی سڈنی سے ڈیلاس تک کی سروس دنیا کی سب سے طویل کمرشل پرواز ہے جو 8568 میل طویل ہے۔

مزید پڑھنے کے لیے اس لنک پر کلک کریں (دی اکانومسٹ)

2: کئی مائیں اپنے دیگر بچوں کے قد کا اندازہ نسبتا ٹھیک لگاتی ہیں لیکن سب سے چھوٹے بچے کے معاملے میں ان کا خیال اس کے حقیقی قد سے کچھ کم ہوتا ہے۔

تفصیل کے لیے اس لنک پر کلک کریں ( نیو سائنٹسٹ)

3: آپ نے یہ تو سنا ہی ہوگا کہ ایک سیب روزانہ ڈاکٹر سے دور رکھتا ہے، خاص طور پر پچاس سال سے زیادہ کی عمر کے لوگوں کو۔

مزید تفصیل اس لنک پر (بی بی سی)

4: کیا آپ جانتے ہیں دنیا میں بلیوں کے لیے واحد تیرتی ہوئی پناہ گاہ کہاں ہے۔ اگر نہیں تو ایمسٹرڈیم میں بے گھر بلیوں کے اس تیرتے ہوئے گھر کے بارے میں پڑھیے۔ تفصیلات اس لنک میں موجود ہیں (وائس ڈاٹ کام)

5: کیا آپ جانتے ہیں پینگوئنز کا گروہ کسی ٹریفک جام کی طرح ساتھ ساتھ چلتا ہے اور برف میں خود کو گروہ کی صورت گرم رکھنے کے لیے وہ چلنے اور رکنے جیسی کچھ مخصوص حرکات کرتے ہیں۔

مزید جاننے کے لیے اس لنک پر تشریف لائیں (میل آن لائن)

6: فرانس میں چائے کی مقبولیت اس سے بھی کہیں زیادہ ہے جتنی برطانیہ میں کافی مقبول ہے۔

ایسا کیوں ہے جاننے کے لیے یہ لنک دیکھیں (دی اکانومسٹ)

7: کلف رچرڈ کا مقبول گیت Mistletoe and Wine دراصل غربت کے بارے میں ایک احتجاجی گیت تھا۔

مزید تفصیل اس لنک میں پڑھیے (بی بی سی)

8: تنگ اور چست جینز کے فیشن نے ڈالر بنانے والوں کو کس مشکل میں ڈال دیا ہے۔

پڑھنے کے لیے اس لنک پر آئیے (واشنگٹن پوسٹ)

9: امریکہ میں ہر 200 ویں نوجوان خاتون کا کہنا ہے کہ وہ کنواری ہونے کے باوجود حاملہ ہو گئی ۔

ایسا کیسے ہوا پڑھنے کے لیے اس لنک پر کلک کیجیئے (دی ٹائمز آف لندن)

10: برطانیہ میں روایتی گریٹنگ کارڈز دنیا میں کسی بھی ملک سے زیادہ بھیجے جاتے ہیں۔

مزید پڑھنے کے لیے اس لنک پر آئیے (بی بی سی ٹرینڈنگ)

اسی بارے میں