نواب شاہ میں ٹریفک حادثہ، 18 بچوں سمیت 21 ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ابتدائی تحقیقات سے ظاہر ہوتا ہے کہ حادثے کا ذمہ دار ڈمپر کا ڈرائیور ہے: پولیس

پاکستان کے صوبہ سندھ کے ضلع نواب شاہ میں ایک ٹریفک حادثے میں 18 طلبا و طالبات سمیت 21 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔

یہ حادثہ بدھ کو نواب شاہ کی قاضی احمد لنک روڈ پر ہوا اور ہلاک ہونے والوں کا تعلق تحصیل دولت پور شفن سے تھا۔

ڈپٹی کمشنر نواب شاہ عبدالعلیم لاشاری کا کہنا ہے کہ طالب علم کوئز مقابلے میں شرکت کے لیے نواب شاہ آئے تھے اور پروگرام کے بعد واپس جارہے تھے کہ ایک تیز رفتار ڈمپر بچوں کی ویگن سے ٹکرایا جس کے نتیجے میں 21 افراد ہلاک ہوگئے۔

ڈپٹی کمشنر کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں اکثریت طالب علموں کی ہے جب کہ 15 بچے زخمی ہیں جنھیں تمام طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔

پولیس کے مطابق ہلاک ہونے والوں اور زخمیوں کو پیپلز میڈیکل کالج ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پاکستان میں گذشتہ کچھ عرصے میں طالبعلموں کی گاڑیوں کو کئی حادثات پیش آئے ہیں

حادثے کے بعد ہسپتال میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد پہنچ گئی ہے جن میں زیادہ تر بچوں کے والدین تھے۔

صحافی علی حسن کے مطابق اس حادثے میں دو سگی بہنوں سمیت بارہ طالبات اور چھ طلبا ہلاک ہوئے ہیں جن کی اجتماعی نمازِ جنازہ جمعرات کو دولت پور میں ادا کی جائے گی۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ تاحال اس واقعے کا مقدمہ درج نہیں کیا گیا ہے اور ضلعی پولیس ڈمپر کے ڈرائیور کے خلاف حادثے کی بجائے قتل کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرنے پر غور کر رہی ہے۔

نواب شاہ پولیس کے ضلعی سربراہ ایس ایس پی جاوید جسکانی کا کہنا ہے کہ ’یہ حادثے کا نہیں بلکہ قتل کا مقدمہ بنے گا۔ہم نے قتل کی ایف آئی آر درج کروانے کے لیے سکول کی انتظامیہ سے رابطہ کیا ہے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ابتدائی تحقیقات سے ظاہر ہوتا ہے کہ حادثے کا ذمہ دار ڈمپر کا ڈرائیور ہے جسے حراست میں لے لیا گیا ہے۔ جاوید جسکانی کے مطابق ڈرائیور غلط سمت پر جا رہا تھا جب اس نے سکول کی گاڑی کو ٹکر ماری۔

اسی بارے میں