میر علی میں کارروائیوں میں چالیس شدت پسند ہلاک، عسکری ذرائع

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کارروائی میں شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر فضائی حملے کیے گئے

پاکستان کے عسکری ذرائع کے مطابق قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں شدت پسندوں کے مشتبہ ٹھکانوں پر فوج کے فضائی حملوں میں 40 شدت پسند ہلاک ہوئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق یہ کارروائی پیر کی رات میر علی اور اس کے گردونواح میں کی گئی۔

بنوں حملہ ہم نے کیا، مذاکرات کے لیے تیار ہیں: طالبان

قصہ خوانی بازار دھماکہ، ہلاکتیں 42

عسکری ذرائع کا کہنا ہے کہ فوج کو علاقے میں شدت پسندوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاعات ملی تھیں جس کے بعد یہ کارروائی کی گئی ہے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ گزشتہ رات جیٹ طیاروں نے شمالی وزیرستان کے علاقوں میر علی اور میران شاہ میں مشتبہ عسکریت پسندوں کے ٹھکانوں پر حملے کیے جبکہ منگل کی صبح گن شپ ہیلی کاپٹر وقفے وقفے سے شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر حملے کرتے رہے۔

تحریکِ طالبان پاکستان کے ترجمان شاہد اللہ شاہد نے ایک بیان میں دعوی کیا ہے کہ اس کارروائی میں 50 عورتیں اور بچے مارے گئے ہیں جبکہ سینکڑوں افراد زخمی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پشاور کے قصہ خوانی بازار میں ہوئے دھماکے میں کم سے کم 42 افراد ہلاک ہوئے تھے

طالبان کے ترجمان نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ میر علی کے علاقے میں ایک مسجد پر بھی بمباری کی گئی اور وہاں متعدد افراد ہلاک ہوئے۔

یہ بھی اطلاع ہے کہ جیٹ طیاروں کی بمباری میں عام شہریوں کے مکان بھی نشانہ بنے ہیں۔

تاہم عسکری اور طالبان دونوں کے دعوؤں کی آزاد ذرائع سے تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔

پاکستانی فوج کی اس کارروائی میں ہلاک ہونے والے بعض شدت پسندوں کا تعلق حال ہی میں پشاور کے قصہ خوانی بازار اور بنوں میں فوج پر ہونے والے حملوں سے بتایا جا رہا ہے۔

مقامی لوگوں کا بھی کہنا ہے کہ کارروائی میں مرنے والے بیشتر عسکریت پسند ہیں۔ تاہم طالبان کی طرف سے اس سلسلے تاحال کوئی موقف سامنے نہیں آ سکا ہے۔

یاد رہے کہ چند روز قبل صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع بنوں میں چھاؤنی کے علاقے میں سکیورٹی فورسز کے ایک قافلے کے قریب دھماکے میں 20 اہل کار ہلاک اور 20 سے زیادہ زخمی ہوئے تھے۔

اس سے پہلے گذشتہ سال کے آخر میں ماہِ ستمبر میں صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور کے تاریخی بازار قصہ خوانی میں ہونے والے بم دھماکے میں 42 افراد ہلاک اور 90 زخمی ہو گئے تھے۔

اسی بارے میں