پشاور کے تمام سینما گھر بند

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پشاور شہر میں ماضی میں بھی سینما گھر شدت پسندوں کا نشانہ بنتے رہے ہیں

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں تمام سینما گھر تین دن کے لیے بند کر دیے گئے ہیں۔ یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ سینما گھر کس نے بند کرائے ہیں لیکن ان سینما گھروں میں موجود کارکن انتہائی خوفزدہ تھے۔

پشاور میں دو سینما گھروں پر حملوں کے بعد آج شہر میں کسی بھی سینما گھر میں کسی بھی فلم کا کوئی شو نہیں دکھایا گیا ہے۔

ایسی اطلاعات تھیں کہ یہ سینما گھر پولیس کے کہنے پر بند کیے گئے ہیں لیکن پشاور شہر کے سپریٹنڈنٹ پولیس نے بی بی سی کے پوچھنے پر بتایا کہ انھوں نے کوئی سینما گھر بند نہیں کرائے اگر سینما گھروں کے مالکان یا سینما گھروں کی انتظامیہ نے بند کرائے ہیں تو اس بارے میں انھیں کچھ علم نہیں ہے۔

محکہ داخلہ کی جانب سے ایک بیان جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ تمام سینما گھروں میں کیمرے اور ڈیٹیکٹرز نصب کیے جائیں اور ان سینما گھروں کی سکیورٹی بڑھائی جائے۔ یہ حکم سیکرٹری داخلہ کی جانب سے انسپکٹر جنرل پولیس کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو جاری کیا گیا ہے۔

اس بارے میں ڈپٹی کمشنر پشاور کے پی آر او کا کہنا تھا کہ ان کی جانب سے سینما گھر بند کرنے کے کوئی احکامات جاری نہیں ہوئے ہیں۔

سینما گھروں میں موجود کارکن آج انتہائی خوفزدہ تھے اور وہ کسی سے بات کرنے کو تیار نہیں تھے۔ ان کارکنوں کا کہنا تھا کہ سینما گھروں میں مینجرز یا ذمہ دار افسر موجود نہیں ہیں اور وہ صرف کارکن ہیں جو سینماگھر کی حفاظت پر معمور ہیں۔

دس روز میں پشاور کے دو سینما گھروں پر حملے کیے گئے ہیں جن میں کم سے کم سترہ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption حکام نے حالیہ شدت پسندی کے حملوں کے بعد سینما گھروں کی سکیورٹی بڑھانے کے انتظامات کرنے کا اعلان کیا ہے

پکچر ہاؤس سینما گزشتہ دس روز سے بند ہے ۔ پکچر ہاؤس سینما کے باہر بیٹھے ہوئے ایک کارکن نے بتایا کہ جب سے اس سینما میں دھماکے ہوئے تھے اس کے بعد سے یہاں کوئی فلم کا شو نہیں ہوا ہے۔ پکچر ہاؤس سینما میں دس روز پہلے دھماکوں میں پانچ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

شمع سینما بھی بند ہے۔ شمع سینما میں دو روز پہلے تین دھماکے کیے گئے تھے جس میں بارہ افراد ہلاک ہوئے تھے۔ دیگر سینما آج سے بند کر دیے گئے ہیں۔

ارشد سینما میں موجود ایک کارکن نے بتایا کہ بس حالات ایسے ہیں کہ وہ فلمیں نہیں دکھا سکتے اس لیے سینما بند کر دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ لوگ بھی نہیں آ رہے تو وہ کس کے لیے فلمیں دکھائیں گے؟

ان سے جب مزید بات چیت کرنا چاہی تو انہوں نے بات کرنے سے انکار کر دیا۔

پشاور صدر میں کیپٹل سینما میں موجود ایک کارکن نے بتایا کہ انہیں کسی نے بند کرنے کا نہیں کہا بلکہ انھوں نے شہر میں جو سینما گھر بند ہیں ان کی حمایت میں بند کیے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ سینما گھر صرف تین روز کے لیے بند ہیں امید ہے کہ پیر کے دن سے تمام سینما گھر پھر سے فلمیں دکھائیں گے۔

پشاور سمیت صوبے کے دیگر شہروں میں بیشتر سینما گھر مسلسل خسارے کی وجہ سے بند ہو چکے ہیں۔ پشاور میں کچھ عرصہ پہلے تک سولہ سینما گھر تھے جن میں سے لگ بھگ دس مختلف وجوہات کی وجہ سے بند ہو کر ان کی جگہ پر پلازے اور بڑی عمارتیں بن چکی ہیں۔

اسی بارے میں