سکردو: برفانی تودہ گرنے سے ایک فوجی ہلاک، دو لاپتہ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اپریل 2012 میں سیاچن کے گیاری سیکٹر میں ایک 80 فٹ اونچا اور ایک کلومیٹر طویل برفانی تودہ پاکستانی فوج کی ناردرن لائٹ انفنٹری کے بٹالین ہیڈکوارٹر پر گرا تھا

پاکستان کے عسکری ذرائع کے مطابق ملک کے شمالی علاقے سکردو کے قریب برفانی تودہ گرنے کے نتیجے میں ایک فوجی ہلاک جبکہ دو لاپتہ ہو گئے ہیں۔

فوجی ذرائع نے بتایا ہے کہ برفانی تودہ گرنے کا یہ حادثہ جمعرات کی صبح سویرے سکردو کے قریبی علاقے میں پیش آیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ دو فوجی تاحال لاپتہ ہیں جنھیں برفانی تودے کے نیچے سے نکالنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

پاکستان کے شمالی علاقہ جات میں موسم سرما کے دوران شدید برفباری کے باعث لینڈسلائیڈ اور برفانی تودے گرنے کے واقعات اکثر پیش آتے رہتے ہیں۔

اپریل 2012 میں سیاچن کے گیاری سیکٹر میں ایک 80 فٹ اونچا اور ایک کلومیٹر طویل برفانی تودہ پاکستانی فوج کی ناردرن لائٹ انفنٹری کے بٹالین ہیڈکوارٹر پر گرا تھا۔ اس حادثے میں 128 فوجی اور 11 شہری اس تودے تلے دب کر ہلاک ہو گئے تھے، جن میں سے بیشتر کا تعلق سکردو سے تھا۔

یاد رہے کہ 2012 میں پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر میں لائن آف کنٹرول کے قریب برفانی تودوں کی زد میں آ کر 14 افراد ہلاک ہوگئے تھے جن میں سے آٹھ کا تعلق پاکستانی فوج سے تھا۔ عسکری حکام کے مطابق یہ واقعہ مظفر آباد سے 80 میل دور وادئ نیلم کے شاردا سیکٹر میں دانا تاجیان کے مقام پر پیش آیا۔

اسی بارے میں